کے ٹی آر کا راجہ سنگھ پر طنز

راجہ سنگھ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے یہ کہا تھا کہ ”کے ٹی آر جی! آپ میری بلٹ گاڑی پر بیٹھ کر گوشہ محل حلقہ اور پرانے شہر کا دورہ کریں۔ اس دورہ کے دوران آپ ترقیاتی کاموں کا از خود جائزہ لیں۔

حیدرآباد: ریاستی وزیر بلدی نظم ونسق اور شہری ترقیات کے ٹی آر اور بی جے پی ایم ایل اے راجہ سنگھ کے درمیان ٹوئٹر پر الفاظ کی جنگ چل پڑی ہے۔ ریاستی وزیر نے بی جے پی رکن اسمبلی پر پٹرول، ڈیزل اور گیس کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ پر طنز کیا اور بعدازاں انہیں چیالنج کیا کہ وہ ان کی(سنگھ) بائک پر سوار ہو کر سنگھ کے حلقہ گوشہ محل اور پرانے شہر میں ترقیاتی کاموں کا جائزہ لیں گے۔

 کے تارک راما راؤ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے راجہ سنگھ سے کہا کہ آپ کیوں پٹرول بینک نہیں جاتے؟ اور پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ پر عوام کیا کہہ رہے ہیں، اس بارے میں معلومات کیو ں حاصل کرنا نہیں چاہتے۔آپ کسی گھر پر رک جائیں اور ان سے معلوم کریں کہ ایل پی جی سلنڈر کی قیمت میں کس طرح اضافہ ہورہا ہے؟۔ راما راؤ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے یہ بات کہی۔

”جی ڈی پی (گیس، ڈیزل، پٹرول) سوناہی ہوگیا؟۔ اب آپ یہ جملے بند کرو، کام سے دل جیتو“ کے ٹی آر نے جس کے لئے وہ مشہور ہیں، سنگھ کو یہ مشورہ دیا۔ کے ٹی آر، بی جے پی ایم ایل اے راجہ سنگھ کے ٹوئٹ اور ویڈیو بیان جو انہوں نے 16/ اکتوبر کو دیا تھا، پر ردعمل کاا ظہار کررہے تھے۔

راجہ سنگھ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے یہ کہا تھا کہ ”کے ٹی آر جی! آپ میری بلٹ گاڑی پر بیٹھ کر گوشہ محل حلقہ اور پرانے شہر کا دورہ کریں۔ اس دورہ کے دوران آپ ترقیاتی کاموں کا از خود جائزہ لیں۔ بی جے پی ایم ایل اے نے اپنے ویڈیو بیان میں بارش کے وقت سڑکوں پر پانی جمع ہونے اور اس سے عوام کو ہونے والی مشکلات کی طرف توجہ مبذول کرانے کیلئے کے ٹی آر کو اپنی گاڑی کی سواری کا چیالنج کیا تھا۔

 ریاستی اسمبلی میں کے ٹی آر کی تقریر کا راجہ سنگھ نے حوالہ دیا اور کہا کہ کے ٹی آر نے یہ کہا تھا کہ پرانے شہر میں ترقیاتی کاموں کیلئے فنڈس کی کوئی کمی نہیں ہے۔ سنگھ نے کہا کہ شہر میں بارش کے وقت ڈرین ابل پڑتے ہیں۔ پانی مکانات اور دکانات میں داخل ہوجاتا ہے جس سے عوام کو شدید نقصانات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

 بی جے پی کے رکن اسمبلی نے کہا کہ ایوان میں بات کرنے کے بجائے وزیر کے ٹی آر اگر اسمبلی سے باہر آتے اور سڑکوں کو دیکھتے تو انہیں زمینی صورتحال کا پتہ چلتا۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.