یو پی کی ترقی ظاہر کرنے تلنگانہ کے سری سیلم ڈیم کی تصویر کا استعمال (وائرل فوٹو)

تصویر کو قحط سالی سے متاثرہ علاقہ بنڈیل کھنڈ کو وزیر اعظم مودی اور چیف منسٹر یوگی کے دورے کے دوارن آبپاشی پراجکٹس حاصل ہوں گے۔ کئی افراد نے اس تصویر کے ساتھ کہ ڈیم کی تصویر اتر پردیش سے ہے ٹویٹر پر شیر کیا تھا۔ مگر یہ دعویٰ غلط تھا۔

حیدرآباد: بی جے پی قائدین کی جانب سے اتر پردیش میں انفراسٹرکچر کے فروغ کو بڑھا چڑھا کر پیش کرنے کیلئے تلنگانہ کے سری سیلم ڈیم کی تصاویر کو استعمال کیا گیا۔ واضح رہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے اتر پردیش کے ضلع مہوبہ میں خطاب کے بعد بی جے پی قائدین کی جانب سے علاقہ بنڈیل کھنڈ میں انفرااسٹرکچر کے فروغ کے لئے کئے جارہے اقدامات کو پیش کرنے کیلئے ایک تصویر کو استعمال کیا گیا۔

بی جے پی قائدین انیل کمار، اودیش سنگھ اور روندر ناتھ نے اس تصویر کو قحط سالی سے متاثرہ علاقہ بنڈیل کھنڈ کو وزیر اعظم مودی اور چیف منسٹر یوگی کے دورے کے دوارن آبپاشی پراجکٹس حاصل ہوں گے۔  کئی افراد نے اس تصویر کے ساتھ کہ ڈیم کی تصویر اتر پردیش سے ہے ٹویٹر پر شیر کیا تھا۔ مگر یہ دعویٰ غلط تھا۔ نیوز میٹر کی جانب سے جب تصویر کا ریورس امیج سرچ کیا گیا تو پتہ چلا کہ انگریزی روزنامہ دکن کرانیکل نے2014 میں شائع رپورٹ میں ڈیم کی تصویر آندھرا پردیش میں سری سیلم ڈیم کے طور پر شائع کی تھی۔2015-16-17 میں دکن کرانیکل میں شائع رپورٹس میں اس تصویر کو استعمال کیا گیا تھا۔

 دوسری طرف ٹائمس آف انڈیا اور دی نیوز منٹ نے بھی اس تصویر کی شناخت سری سیلم ڈیم کی ہی کی تھی۔ ٹی آر ایس آر ٹی سی کی ویب سائٹ پر  ٹور پیکیج میں بھی اسی تصویر کو استعمال کیا گیا جس سے بی جے پی قائدین کے دعوے جھوٹے ثابت ہوگئے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.