سابق چیف منسٹر فڈنویس کو 5کروڑ کا ہتک عزت نوٹس

نواب ملک کے داماد سمیر خان نے سابق چیف منسٹر دیویندر فڈنویس کو ان کے خلاف بے بنیاد الزامات عائد کرنے پر 5کروڑ روپئے کا ہتک عزت نوٹس بھیجا اور معذرت خواہی کا مطالبہ کیا۔

ممبئی: ریاستی وزیر نواب ملک کے داماد سمیر خان نے سابق چیف منسٹر دیویندر فڈنویس کو ان کے خلاف بے بنیاد الزامات عائد کرنے پر 5کروڑ روپئے کا ہتک عزت نوٹس بھیجا اور معذرت خواہی کا مطالبہ کی۔ تاہم ریاستی بی جے پی کے ترجمان نے کہا کہ وہ نوٹس کا قانونی طور پر جواب دیں گے۔ نواب ملک کی بیٹی نیلوفر ملک خان نے نے جمعرات کو اپنے ٹوئٹر ہینڈل پر 10 / نومبر کے قانونی نوٹس کا اسناپ شاٹ پوسٹ کیا۔

 انہوں نے ٹوئٹ کیا کہ جھوٹے الزامات زندگیاں تباہ کردیتے ہیں۔ کسی کو بھی الزام عائد کرنے یا مذمت کرنے سے قبل جان لینا چاہیے کہ وہ کیا بول رہے ہیں۔ ہتک عزت کا یہ نوٹس جھوٹے دعوؤں اور بیانات کے لیے ہے جو دیویندر پھڈنویس نے میرے خاندان کے خلاف دیے ہیں۔ ہم پیچھے ہٹنے والے نہیں ہیں۔“ واضح رہے کہ سمیر خان کو این سی بی نے رواں سال جنوری میں مبینہ ڈرگس کیس میں گرفتار کیا تھا۔ بعد ازاں ثبوتوں کے فقدان کی وجہ سے انہیں عدالت سے ستمبر میں ضمانت مل گئی۔ پھڈنویس کو روانہ کردہ قانونی نوٹس میں سمیر خان کے وکیل نے  کہا کہ ان کے موکل کو این سی بی کی جانب سے کیس میں ”جھوٹے طور پر پھنسایا گیا۔

“ ایجنسی نے الزام عائد کیا کہ وہ ڈرگ مافیا میں  شامل ہیں۔ جولائی میں چارج شیٹ داخل کرنے کے بعد خان کو ضمانت پررہا کیا گیا۔مگر پھڈنویس نے یکم نومبر کو نیوز چینل کو دیے گئے بیان میں کہا کہ ملک کا داماد ڈرگس کے ساتھ پکڑا گیا اور کہا کہ کس کے گھر میں منشیات پائی گئیں۔“

یہ الزامات بے بنیاد اور کھوکھلے ہیں۔ لہٰذا وہ پھڈنویس کے بیانات سے ہونے والی ذہنی اذیت، ہراسانی، مالی نقصانات اور بدنامی کے ہرجانہ کے طور پر 5کروڑ روپئے کا مطالبہ کررہے ہیں۔اس کے علاوہ بی جے پی لیڈر سے ان کے بیان پر تحریری معذرت خواہی کابھی مطالبہ کیا جاتا ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.