منشیات کی لعنت کیلئے کون ذمہ دار ہے؟:سنجے راوت

شیوسینا قائد نے کہا کہ ملک میں عرصہ سے ایسی ہندوتوا وادی حکومت برسراقتدار رہنے کے باوجود آر ایس ایس سربراہ نے آج منشیات اور پیسے کے استعمال پر تشویش ظاہر کی۔ ہم جاننا چاہیں گے کہ موہن بھاگوت اس صورتِ حال کے لئے کسے ذمہ دار ٹھہرائیں گے۔

ممبئی: سماج میں منشیات کے بڑھتے استعمال پر آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کی تشویش پر شیوسینا قائد سنجے راوت نے جمعہ کے دن مرکز کو نشانہ تنقید بنایا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے دعویٰ کیا تھا کہ نوٹ بندی سے منشیات کی لعنت پر روک لگے گی لیکن ملک میں یہ لعنت آج بھی موجودہے۔

سنجے راوت نے سنگھ سربراہ سے سوال کیا کہ وہ منشیات کی موجودہ صورتِ حال کے لئے کسے ذمہ دار ٹھہرائیں گے۔ شیوسینا قائد نے کہا کہ موہن بھارت کے ریمارکس بتاتے ہیں کہ انہوں نے مان لیا ہے کہ مرکزی حکومت کے تیقنات کے باوجود کچھ نہ کچھ خرابی ہے۔ سنجے راوت نے موہن بھاگوت کے ریمارکس کے حوالہ سے اخباری نمائندوں سے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے باربار وعدہ کیا تھا کہ نوٹ بندی کے ان کے فیصلہ کی مار کالادھن پر پڑے گی جو منشیات کی تجارت سے اکٹھا کیا جاتا ہے اور ملک دشمن سرگرمیوں میں اس کا استعمال ہوتا ہے۔

 شیوسینا قائد نے کہا کہ ملک میں عرصہ سے ایسی ہندوتوا وادی حکومت برسراقتدار رہنے کے باوجود آر ایس ایس سربراہ نے آج منشیات اور پیسے کے استعمال پر تشویش ظاہر کی۔ ہم جاننا چاہیں گے کہ موہن بھاگوت اس صورتِ حال کے لئے کسے ذمہ دار ٹھہرائیں گے۔

مرکز میں پکی قوم پرست حکومت موجود ہے۔ وزیراعظم‘ ہندوتوا آئیڈیالوجی کے زبردست حامی ہیں اس کے باوجود ملک میں منشیات کی لعنت برقرار ہے۔ آر ایس ایس سربراہ کس پر الزام دھریں گے۔ انہوں نے مان لیا ہے کہ مرکز کے تیقنات اور عمل آوری میں کچھ نہ کچھ خامی ضرور ہے۔

متعلقہ
ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.