’10 ڈی سی پیز نے دیشمکھ اور پرب کو 40 کروڑ ادا کیے‘: سچن وزے

برطرف پولیس عہدیدار سچن وزے نے ای ڈی کو اپنے بیان میں یہ دعویٰ کیا۔ واضح رہے کہ تبادلے کے یہ احکام سابق پولیس کمشنر پرم بیر سنگھ نے جاری کیے تھے۔

ممبئی: وزیر ٹرانسپورٹ انل پرب اور ان کے سابق کابینی رفیق انل دیشمکھ نے ممبئی میں 10ڈی سی پیز سے ان کے تبادلہ کے احکام کو پلٹنے 40 کروڑ روپئے وصول کیے تھے۔

برطرف پولیس عہدیدار سچن وزے نے ای ڈی کو اپنے بیان میں یہ دعویٰ کیا۔

واضح رہے کہ تبادلے کے یہ احکام سابق پولیس کمشنر پرم بیر سنگھ نے جاری کیے تھے۔ یہ بیان اُس چارج شیٹ کا حصہ ہے جسے ای ڈی نے دیشمکھ کے سابق پرسنل سکریٹری سنجیو پلانڈے اور پرسنل اسسٹنٹ کندن شندے کے خلاف منی لانڈرنگ کیس میں داخل کیا تھا۔

جولائی 2020میں پرم بیر سنگھ نے ممبئی میں 10ڈی سی پیز کے تبادلوں کے احکام جاری کیے تھے۔

وزے نے اپنے بیان میں دعویٰ کیا کہ دیشمکھ جو اس وقت وزیرداخلہ تھے اور پرب‘ سنگھ کے تبادلوں کے احکام سے خوش نہیں تھے۔

بعد ازاں مجھے پتہ چلا کہ تبادلوں کے احکام کی فہرست میں موجود پولیس عہدیداروں سے 40کروڑ روپئے وصول کیے گئے تھے۔ اس میں سے 20کروڑ انل دیشمکھ اور انل پرب کو دیے گئے تھے۔

“ منی لانڈرنگ کیس میں داخل کردہ چارج شیٹ میں پلانڈے اور شندے کے علاوہ وزے بھی ملزم بنائے گئے ہیں۔

تاہم نہ  دیشمکھ اور نہ ہی ان کے ارکان خاندان کو چارج شیٹ میں ملزم بنایا گیا ہے۔ پلانڈے اور شندے فی الحال عدالتی تحویل میں ہیں۔

چارج شیٹ کہتی ہے کہ پلانڈے اور شندے نے منی لانڈرنگ کیس میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.