اسرو کے پروگرام کی مجوزہ منتقلی کے خلاف سینکڑوں طلباء کا احتجاج

ریاستی کانگریس صدر ڈی کے شیوکمار جنہوں نے ایجی ٹیشن کی قیادت کے نے کہا کہ اسرو ادارہ کرناٹک کے لیے باعث افتخار ہے جو علم اور تکنیک کا مرکز ہے۔ ہمیں اسے منتقلی سے بچانا ہوگا۔

بنگلورو: ہندوستانی خلائی تحقیقی ادارہ (اسرو) کے ہندوستانی انسانی خلائی فلائٹ پروگرام کی کرناٹک سے گجرات منتقلی کی افواہوں کی مذمت کرتے ہوئے سینکڑوں طلباء نے نیشنل اسٹوڈینٹ یونین آف انڈیا (این ایس یو آئی) کے بینر تلے علامتی احتجاج کیا۔

ریاستی کانگریس صدر ڈی کے شیوکمار جنہوں نے ایجی ٹیشن کی قیادت کی نے کہا کہ اسرو ادارہ کرناٹک کے لیے باعث افتخار ہے جو علم اور تکنیک کا مرکز ہے۔ ہمیں اسے منتقلی سے بچانا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پراجکٹ کی گجرات منتقلی کو ثابت کرنے میرے پاس دستاویزات ہیں۔

ویب سائٹ پر اس کے تعلق سے بہت سی معلومات ہیں۔ اسرو سامنے آئے اور وضاحت کرے کہ پروگرام گجرات منتقل نہیں ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں اسرو کے چیرپرسن کے بیان کی مذمت کرتا ہوں کہ جب وہ ہندوستان کے لیے کام کرتے ہیں تو جگہ کوئی معنی نہیں رکھتی۔

مجھے ان کے خلاف کچھ نہیں کہنا۔ انہیں اپنے سیاسی آقاؤں اور وزیراعظم کی ہدایت کے مطابق کام کرنا ہے۔ انہیں اپنا بیان واپس لینا چاہیے۔“ پراجکٹ کی گجرات منتقلی کے خلاف احتجاج کرنے والے طلباء کو گرفتاری کی دھمکی دی جارہی ہے۔ ہم گرفتاری اور پولیس سے خوفزدہ نہیں ہیں۔ ہم ریاست کی بھلائی کے لیے جو کچھ کرنا پڑے، کرنے کو تیار ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.