دلت بچہ مندر میں داخل ہونے پر 23 ہزار کا جرمانہ

باپ بچہ کو اس کی سالگرہ پر باپ ہنومان مندر لے گیا تھا۔ دلتوں کو مندر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوتی‘ وہ باہر سے ہی پوجا کرلیتے ہیں۔ لیکن بچہ مندر کے اندر چلا گیا۔

کوپل (کرناٹک): ایک دلت بچہ کے ماں باپ پر 23 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا گیا کیونکہ ان کا 2 سالہ لڑکا ہنومان مندر میں داخل ہوگیا تھا۔ یہ واقعہ کرناٹک کے ضلع کوپل کے موضع میاں پور میں پیش آیا جو ہنومان ساگر کے قریب واقع ہے۔ بچہ کو اس کی سالگرہ پر باپ ہنومان مندر لے گیا تھا۔ دلتوں کو مندر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوتی‘ وہ باہر سے ہی پوجا کرلیتے ہیں۔

 باپ ایسی ہی کرنا چاہتا تھا لیکن بچہ مندر کے اندر چلاگیا اور مورتی کے سامنے ہاتھ جوڑکر واپس آگیا۔ یہ واقعہ 4 ستمبر کو پیش آیا۔ یہ بڑا مسئلہ بن گیا۔ اعلیٰ ذات ہندوؤں نے کہا کہ مندر‘ اپوتر(ناپاک) ہوگیا ہے۔ انہوں نے 11 ستمبر کو پنچایت کی اور ماں باپ سے 23 ہزار روپے ادا کرنے کو کہا۔

 یہ رقم مندر کو پوتر(پاک) کرنے کے لئے استعمال ہوگی۔ ضلع انتظامیہ کو جب پتہ چلا تو اس نے پولیس‘ ریونیو اور سوشیل ویلفیر محکموں کے عہدیدار گاؤں بھیجے۔ عہدیداروں نے تمام مواضعات میں بیداری مہم چلائی کہ چھوت چھات منع ہے۔ انہوں نے اعلیٰ ذات ہندوؤں کو خبردار کیا۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.