ہیلت سنٹرس کو 24 گھنٹے کھلا رکھنے عوام کا مطالبہ

 محکمہ صحت کے عہدیدار کے مطابق رات کے اوقات میں بھی پرائمری ہیلت سنٹر کو کھلا رکھنے کی درخواست کی گئی ہے۔ اس مسئلہ پر محکمہ کام کررہا ہے۔ نئے تقررات کے بعد تمام سنٹرس میں دن کے24 گھنٹے طبی خدمات دستیاب کرائی جاسکتی ہیں۔

حیدرآباد: ریاست تلنگانہ میں گذشتہ چند دنوں کے دوران موسمی امراض کے بڑھتے واقعات کو مدنظر رکھتے ہوئے عوام نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ پرائمری ہیلت سنٹرس، اربن پرائمری ہیلت سنٹرس اور بستی دواخانوں کو دن کے24گھنٹے کھلا رکھنے کے احکام جاری کرے یا پھر کم از کم ان طبی مراکز کے اوقات میں 10بجے شب تک توسیع کرنے کے اقدامات کرے۔

 دونوں شہروں حیدرآباد اور سکندرآباد میں پرائمری ہیلت سنٹرس، اربن ہیلت سنٹرس اور بستی دواخانے9 بجے صبح سے4 بجے شام ہی کام کرتے ہیں، موجودہ حالات کے پیش نظر ان اداروں کے اوقات کارمیں 10 بجے شب تک توسیع کرنے یا پھر24 گھنٹے کھلا رکھنے کی ضرورت ہے۔

 دیہی علاقوں کے عوام، پرائمری ہیلت سنٹرس اور ایریا یاڈسٹرکٹ ہاسپٹلس پر انحصار کرتے ہیں۔ شکایتوں پر عوام ہیلت سنٹرس سے رجوع ہوتے ہیں جبکہ ہلکی علامتوں یا مرض میں شدت کی صورت میں ایریا، یا ڈسٹرکٹ ہاسپٹلس جاتے ہیں۔ بیشتر پی ایچ سیز، اربن ہیلت سنٹرس اور بستی دواخانوں میں ڈاکٹرس اور عملہ کی کمی ہے۔ اسٹاف کا انتظام کرنے کیلئے ہیلت سنٹرس کے اوقات کار میں توسیع کی جاسکتی ہے۔ تلنگانہ میں 885 سرکاری، ہیلت سنٹرس ہیں ان میں 636 پرائمری اور 249 اربن پرائمری ہیلت سنٹرس شامل ہیں۔

 شہر کے کئی اربن پرائمری ہیلت سنٹرس میں لنچ کے وقت ڈاکٹرس دستیاب نہیں رہتے ہیں۔ یہ عام شکایت ہے۔ بالا جی نگر کوکٹ پلی کے رہنے والے ایک شخص نے کہا کہ وہ2.45 بجے دن کوکٹ پلی کے اربن ہیلت سنٹرس گئے تھے تاہم اُس وقت کوئی ڈاکٹر نہیں تھا۔ اسٹاف نے بتایا کہ ڈاکٹر لنچ کیلئے گئے ہوئے ہیں۔ ایک گھنٹے کے بعد وہ دوبارہ سنٹر پہنچے تو انہیں معلوم ہوا کہ ڈاکٹراور اسٹاف، ڈیوٹی ختم کرکے جا چکے ہیں۔

 محکمہ صحت کے عہدیدار کے مطابق رات کے اوقات میں بھی پرائمری ہیلت سنٹر کو کھلا رکھنے کی درخواست کی گئی ہے۔ اس مسئلہ پر محکمہ کام کررہا ہے۔ نئے تقررات کے بعد تمام سنٹرس میں دن کے24 گھنٹے طبی خدمات دستیاب کرائی جاسکتی ہیں۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.