نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان 14 نومبر کو ٹی ٹوئنٹی فائنل مقابلہ

۔ نیوزی لینڈ نے پہلے سیمی فائنل میں انگلینڈ کو جبکہ آسٹریلیا نے دوسرے سیمی فائنل میں سابق چمپئن پاکستان کو شکست دیکر خطابی مقابلہ میں جگہ بنائی تھی۔

دبئی: ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ 2021 کا فائنل کل نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان کھیلا جائے گا۔ نیوزی لینڈ نے پہلے سیمی فائنل میں انگلینڈ کو جبکہ آسٹریلیا نے دوسرے سیمی فائنل میں سابق چمپئن پاکستان کو شکست دیکر خطابی مقابلہ میں جگہ بنائی تھی۔  دنیائے کرکٹ کا سب سے بڑا مقابلہ 2 بہترین ٹیموں کے درمیان کل کھیلا جائے گا، تمام نظریں کل ہونے والے ورلڈکپ فائنل پر جمی ہوئی ہیں۔ کیویز نے اب تک ہونے والے میاچس میں صحیح معنوں میں ٹیم ورک دکھاتے ہوئے فائنل میں جگہ بنائی ہے۔ ٹیم میں اسپن کے شعبے میں اش سودھی اور مچل سینٹنر پر انحصار کرے گی وہیں یٹنگ کی ذمہ داری کپتان کین ولیمسن کے کندھوں پر ہوگی۔

 اس میچ سے قبل نیوزی لینڈ کو اس وقت برا دھکا لگا جب ان کے وکٹ کیپر بیٹر ڈیوون کانوے انجری کی وجہ سے میچ سے باہر ہوگئے ہیں۔ تاہم نیوزی لینڈ نے ان کے متبادل کھلاڑی کو حاصل نہ کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ ایسے میں توقع ہے کہ وکٹ کیپر بلے باز ٹم سیفرٹ کو قطعی 11 کھلاڑیوں میں شامل کیا جائے۔ سیفرٹ ایک جارحانہ بلے باز ہیں اور وہ ٹی ٹوئنٹی کے ماہر کھلاڑی بھی سمجھے جاتے ہیں۔ نیوزی لینڈ کو کپتان کین ولیمسن کے علاوہ سلامی بلے باز ڈیرل مچل سے بھی کافی توقعات ہیں جنہوں نے سیمی فائنل میں انگلینڈ کے خلاف فاتحانہ اننگز کھیل کر ٹیم کی جیت میں اہم رول ادا کیاتھا۔

 آل راؤنڈر جمی نیشم بھی آسٹریلیا کیلئے خطرناک ثابت ہوسکتے ہیں جنہوں نے انگینڈ کے خلاف محض 11 گیندوں میں 27 رن بناکر انگلش ٹیم کی امیدوں پر پانی پھیردیا تھا۔ دوسری جانب آسٹریلیا کی بات کی جائے تو سیمی فائنل میں پاکستان کو شکست دینے والی ٹیم میں بھی میتھیو ویڈ جیسے جارحانہ مزاج کے کھلاڑی ہیں حو میچ کا پانسہ پلٹنے کی صلا حیت رکھتے ہیں تو دوسری طرف گلین میکسویل ہیں جو گیند کو گراونڈ کی ہر جانب پھینکنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

 مچل اسٹارک اور پیاٹ کیومنس بھی کینگروز کی فاسٹ بولنگ کا اہم ہتھیار ہیں۔ تاہم آسٹریلیا کیلئے کپتان آرون فنچ اور سابق کپتان اسٹیو اسمتھ کی ناقص کارکردگی مسائل پیدا کرسکتی ہے۔ نیوزی لینڈ کے خلاف ان دونوں بلے بازوں کو اپنی صلاحیتوں کے مطابق کھیل پیش کرنا ہوگا۔ بولنگ کے شعبہ میں ایڈم زمپا آسٹریلیا کیلئے سب سے اہم بولر ہیں۔ زمپا ابھی تک کنگاروؤں کے سب سے کامیاب بولر ثابت ہوئے ہیں۔ دونوں ٹیمیں اس سے پہلے کبھی ٹی ٹوئنٹی کا فائنل جیتنے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہیں۔

 اس طرح کل دنیا پہلی بار نیا ٹی ٹوئنٹی چمپئن دیکھے گی۔ دونوں ٹیموں نے سیمی فائنل میں جس طرح شاندار کھیل پیش کرتے ہوئے کامیابیاں حاصل کی ہیں اس سے ماہرین کو توقع ہے کہ کل دبئی میں ایک سنسنی خیز فائنل دیکھنے کو مل سکتا ہے۔ میاچ رات 7.30 بجے شروع ہوگا۔

ذریعہ
اے ایف پی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.