قطر کے وزیر خارجہ کی طالبان قیادت سے ملاقات

عبدالرحمن الثانی جو نائب وزیراعظم بھی ہیں انہوں نے طالبان کی افغانستان پر قبضہ کے بعد کئی مرتبہ کابل کا دورہ کیا لیکن عبوری حکومت کے طالبان کی جانب سے اعلان کے بعد یہ ان کا پہلا دورہ ہے۔

نئی دہلی: قطر کے دورہ کنندہ وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمان الثانی نے طالبان سربراہ اور کابینی ارکان سے ملاقات کی جن میں کارگذار وزیراعظم ملا محمد حسن آخند بھی شامل ہیں۔

عبدالرحمن الثانی جو نائب وزیراعظم بھی ہیں انہوں نے طالبان کی افغانستان پر قبضہ کے بعد کئی مرتبہ کابل کا دورہ کیا لیکن عبوری حکومت کے طالبان کی جانب سے اعلان کے بعد یہ ان کا پہلا دورہ ہے۔

قطری وزیرخارجہ  کل آخند نے صدارتی محل میں ملاقات کی۔ وہ سابق صدر اشرف غنی کی کرسی پر براجمان تھے اور پہلی مرتبہ حکومت کے سربراہ کی حیثیت سے تقرر کے بعد منظر پر آئے۔

یو این آئی کے بموجب  قطر کے نائب وزیراعظم اور وزیر خارجہ محمد بن عبدالرحمن الثانی نے اتوار کو کابل میں طالبان قیادت اور نگراں وزیر اعظم ملا محمد حسن اخوند اور کابینہ کے نئے اراکین سے ملاقات کی۔

طالبان کے سیاسی دفتر کے ترجمان محمد نعیم نے بتایا کہ افغانستان کے نئے وزیر اعظم ملا محمد حسن اخوند نے قطر کے وزیر خارجہ محمد بن عبدالرحمن الثانی سے صدارتی محل میں ملاقات کی اور ملاقات کے دوران انسانی امداد، مستقبل کے معاشی اور اقتصادی امور پر تبادلہ خیال کیا۔

افغانستان کی ترقی اور بین الاقوامی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق الثانی نے ان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ افغانستان کے ساتھ اچھے تعلقات قائم رکھنے اور بین الاقوامی امداد افغانستان تک پہنچانے کا ان سے اپیل کی ہے۔طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے بتایا کہ اس ملاقات میں دوطرفہ تعلقات، انسانی امداد، معاشی ترقی اور دنیا کے دیگر ممالک کے ساتھ افغانستان کے رابطے پر توجہ دی گئی۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ دوحہ معاہدہ ایک تاریخی کامیابی ہے اور تمام ریقین کو اس پر عمل درآمد پر قائم رہنا چاہیے۔طلوع نیوز نے شاہین کے حوالے سے بتایا کہ الثانی نے دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینے کے عزم کا بھی اعادہ کیا ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.