چین میں نیا سرحدی قانون منظور،ہندوستان کیلئے ایک اور پریشانی

نیشنل پیپلز کانگریس کی خائمہ کمیٹی کے ارکان نے ہفتہ کے دن لیجسلیٹیو اجلاس میں نئے قانون کو منظوری دی۔ یہ قانون آئندہ سال یکم جنوری سے لاگو ہوجائے گا جس کی رو سے عوامی جمہوریہ چین کا اقتدار اعلیٰ اور علاقائی سالمیت مقدس قرار پائیں گے۔

بیجنگ: چین کے قومی لیجسلیچر نے زمینی سرحدی علاقوں کے تحفظ کیلئے نیا قانون بنایا ہے۔ اس نے زور دیا ہے کہ چین کا اقتدار اعلیٰ اور علاقائی سالمیت مقدس ہے جس کی خلاف ورزی نہیں کی جاسکتی۔ چین کے اس اقدام کا ہندوستان کے ساتھ سرحدی تنازعہ پر اثر پڑ سکتا ہے۔

 نیشنل پیپلز کانگریس(این پی سی) کی خائمہ کمیٹی کے ارکان نے ہفتہ کے دن لیجسلیٹیو اجلاس میں نئے قانون کو منظوری دی۔ یہ قانون آئندہ سال یکم جنوری سے لاگو ہوجائے گا جس کی رو سے عوامی جمہوریہ چین کا اقتدار اعلیٰ اور علاقائی سالمیت مقدس قرار پائیں گے جن کی خلاف ورزی نہیں کی جاسکتی۔ مملکت علاقائی سالمیت اور زمینی سرحدوں کے تحفظا کے اقدامات کرے گی۔ وہ بارڈر ڈیفنس مستحکم کرے گی۔ اس کے علاوہ سرحدی علاقوں میں معاشی اور سماجی ترقی میں تعاون کرے گی۔ ایسے علاقوں میں عوامی خدمات اور بنیادی ڈھانچہ کو بہتر بنایا جائے گا۔ سرحدی علاقوں میں رہنے والوں کی مدد کی جائے گی۔

 مملکت مساوات کے اصول باہمی اعتماد اور دوستانہ صلح ومشورہ پر عمل پیرا ہوگی۔ وہ دیرینہ سرحدی تنازعات کی یکسوئی کیلئے ہمسایہ ممالک سے بات چیت کرے گی۔ ہندوستان اور بھوٹان دو ممالک ہیں جن کے ساتھ چین نے ابھی تک سرحدی معاہدہ نہیں کئے ہیں۔ دیگر 12پڑوسیوں کے ساتھ چین نے سرحدی جھگڑوں کی یکسوئی کرلی ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.