اسرائیلی فورسس نے فلسطینی خاتون کو گولی مارکر ہلاک کردیا

ایک صحافی نے گولیوں کی آوازیں سنی اور ایک خاتون کی لاش کو زمین پر دیکھا جس پر بعد میں ایک کمبل ڈال دیا گیا تھا۔

یروشلم: اسرائیلی پولیس نے بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک فلسطینی خاتون کو گولی مار کر قتل کردیا جس پر الزام ہے کہ انہوں نے مبینہ طور پر یروشلم کے اولڈ سٹی میں افسران پر چاقو سے حملے کرنے کی کوشش کی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اس کے علاوہ پولیس نے دعویٰ کیا کہ شمال مغربی کنارے میں اسرائیلی فورسز نے ایک لڑکے کو گولی مار کر ہلاک کر دیا جس نے مبینہ طور پر رات گئے گرفتاری کی کارروائی کے دوران ان پر فائرنگ کی تھی۔

پہلے واقعے کے حوالے سے پولیس کے ایک بیان میں بتایا گیا کہ یروشلم میں خاتون نے مسجد الاقصیٰ کی طرف جانے والی ایک گلی میں پولیس پر وار کرنے کی کوشش کی۔

ایک صحافی نے گولیوں کی آوازیں سنی اور ایک خاتون کی لاش کو زمین پر دیکھا جس پر بعد میں ایک کمبل ڈال دیا گیا تھا۔

ڈان کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی پولیس نے بتایا کہ حملہ آور پر ‘فائرنگ’ کی گئی اور ‘جائے وقوع پر پہنچنے والے طبی عملے نے انہیں مردہ قرار دیا۔پولیس نے بتایا کہا کہ حملے کی کوشش کے نتیجے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

پولیس نے دعویٰ کیا کہ مقبوضہ مغربی کنارے کے شمال میں قبطیہ سے تعلق رکھنے والی 30 سالہ خاتون اسلام کی تیسری مقدس ترین جگہ مسجد الاقصیٰ کے کمپاؤنڈ سے نکل رہی تھیں جہاں انہوں نے افسران پر حملہ کیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے دعویٰ کیا کہ شمالی مغربی کنارے میں اسرائیلی فورسز نے ایک لڑکے کو گولی مار کر ہلاک کر دیا جس نے مبینہ طور پر رات گئے گرفتاری کی کارروائی کے دوران ان پر فائرنگ کی تھی۔

پولیس کے ایک بیان کے مطابق یروشلم میں خاتون نے مسجد الاقصیٰ کی طرف جانے والی ایک گلی میں پولیس پر وار کرنے کی کوشش کی۔اے ایف پی کے ایک صحافی نے گولیوں کی آوازیں سنی اور ایک خاتون کی لاش کو زمین پر دیکھا جس پر بعد میں ایک کمبل ڈال دیا گیا تھا۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.