اسلامک اسٹیٹ خراسان کے خلاف طالبان کی کارروائی

طالبان کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے فیصلہ کن دھاوا کیا اور مسجد حملہ میں ملوث 3 دہشت گردوں کو پکڑلیا جس سے اسلامک اسٹیٹ خراسان سیل کا صفایا ہوگیا۔

کابل: طالبان نے کابل کی ایک مسجد کے قریب گزشتہ ہفتہ کے بم حملہ میں ہلاکتوں کے بعد اسلامک اسٹیٹ خراسان کا صفایا کردینے کی بڑی مہم شروع کی ہے۔ طالبان فورسس نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے کابل کے شمال میں ایک اسلامک اسٹیٹ سل تباہ کردیا ہے۔

 دارالحکومت اور ملک کے دیگر حصوں میں داعش کے صفائے کی مہم جاری ہے۔ اسلامک اسٹیٹ خراسان‘ طالبان کے لئے بڑا چیلنج بن کر ابھری ہے۔ اس گروپ نے ماضی میں کئی ہلاکت خیز حملے کئے ہیں۔ اس نے حالیہ حملہ بیرونی افواج کی واپسی کے دوران کابل ایرپورٹ پر کیا تھا اور یہ گزشتہ ہفتہ عیدگاہ مسجد کے باہر خودکش حملہ ہوا جہاں طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کی ماں کے لئے فاتحہ خوانی ہورہی تھی۔

 اسلامک اسٹیٹ خراسان کا ابھرنا اور دارالحکومت میں داعش کارندے‘ افغان حکومت کے لئے بڑا چیلنج بنے ہوئے ہیں۔ طالبان کی اسلامی حکومت کے خلاف بڑی مزاحمت داعش کررہی ہے۔ طالبان کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے فیصلہ کن دھاوا کیا اور مسجد حملہ میں ملوث 3 دہشت گردوں کو پکڑلیا جس سے اسلامک اسٹیٹ خراسان سل کا صفایا ہوگیا۔

 خبر ہے کہ اسلامک اسٹیٹ خراسان نے طالبان قیادت اور افغانستان میں نئی حکومت کی مخالفت کی ہے۔اس کا کہنا ہے کہ یہ حکومت شرعی قانون حکمرانی کے خلاف ہے۔ طالبان حکومت کا کہنا ہے کہ افغانستان میں اسلامک اسٹیٹ خراسان کی منظم موجودگی نہیں  ہے۔

القاعدہ کا ملک میں وجود ہی نہیں ہے تاہم جاریہ حملے بتاتے ہیں کہ طالبان کا یہ دعویٰ درست نہیں۔ تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اسلامک اسٹیٹ خراسان کئی ماہ تک طالبان کابڑا حریف گروپ بنی رہے گی۔ خبر ہے کہ وہ نئے لڑاکے بھرتی کررہی ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.