امریکی سینیٹ میں مخالف پاکستان بل کی پیشکشی

اس اقدا م سے پاکستانی پارلیمنٹ کے ایوان بالا میں خطرہ کی گھنٹیاں بجنے لگی ہیں۔

نئی دہلی: امریکہ سینیٹ میں ایک بل پیش کیاگیاہے جس کے ذریعہ کابل میں طالبان کے قبضہ سے قبل اور اس کے بعد پاکستان کے مبینہ رول کی جانچ کی جائے۔

اس اقدا م سے پاکستانی پارلیمنٹ کے ایوان بالا میں خطرہ کی گھنٹیاں بجنے لگی ہیں۔ ڈان اخبار رپورٹ میں یہ بات بتائی جس کامقصد مختلف ممالک پر تحدیدات کے ساتھ تعزیری اقدامات کرناہے۔

پاکستان کی پیپلز پارٹی کے پارلیمانی قائد اور سینیٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی کے امور خارجہ کے صدر نشین سنیٹر شیری رحمان نے بتایا کہ پاکستان کو افغانستان سے امریکی فورسس کی عاجلانہ واپسی کے بعد اس وقت انتہائی سنگین خطرہ ہے۔

افغانستان کے انسداد دہشت گردی اور نگرانی اور جوابدہ بل کو 22 ریپبلکن سنیٹرس نے پیش کیا ہے۔ سنیٹر رحمان نے افسوس کااظہار کیا کہ امریکہ نے ایک سمجھوتہ کے تحت افغانستان کو چھوڑ دیا جبکہ اس نے یہ سمجھوتہ راست طور پر طالبان کے ساتھ کیا۔

اس کے علاوہ پاکستان پر زور ڈال رہاہے کہ وہ افغانستان میں ہونے والے واقعات کی ذمہ داری قبول کرے۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں اس وقت جو کچھ ہورہاہے اس سے پہلے ہوئے واقعات سے بدتر ہے۔ انہوں بتایا کہ بل کے ذریعہ راست طور پر پاکستان کو نشانہ بنایاگیاہے۔

انہوں نے بتایا کہ دراصل امریکی انتظامیہ پالیسی بل نہیں بلکہ یہ اہمیت رکھتاہے کیونکہ اس سے مسئلہ میں پیچیدگی پیدا ہوسکتی ہے۔ اس کے علاوہ اس کے ذریعہ ہل پر پاکستان کے بارے میں زہریلی جذبات میں اضافہ کی نشاندہی ہوتی ہے جبکہ ہم نے اسے ختم کرنے کے لیے سخت محنت کی ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.