تحریک طالبان کو حکومت کی بالادستی تسلیم کرنی ہوگی: پاکستان

پاکستانی حکام نے ٹی ایل پی سے راست اور طالبان مذاکرات کاروں کے توسط سے کہہ دیا کہ یہ مطالبات قابل قبول نہیں۔

اسلام آباد: ممنوعہ تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ اسے کسی تیسرے ملک میں سیاسی دفتر کھولنے دیا جائے۔ اسلام آباد نے اس مطالبہ کو ناقابل قبول قرار دے کر مسترد کردیا۔

امن معاہدہ کے لئے پاکستانی حکام کے ساتھ سلسلہ وار میٹنگس میں تحریک لبیک پاکستان نے 3 مطالبات کئے۔ کسی تیسرے ملک میں سیاسی دفتر کھولنے دیا جائے‘ وفاقی زیرانتظام قبائلی علاقوں کو صوبہ خیبر پختونخواہ میں ضم کرنے کا فیصلہ واپس لیا جائے اور پاکستان میں اسلامی نظام نافذ کیا جائے۔

دی ایکسپریس ٹریبون نے ہفتہ کے دن یہ اطلاع دی۔

پاکستانی حکام نے ٹی ایل پی سے راست اور طالبان مذاکرات کاروں کے توسط سے کہہ دیا کہ یہ مطالبات قابل قبول نہیں۔

اخبار کے بموجب ٹی ایل پی سے خاص طور پر واضح الفاظ میں کہہ دیاگیا کہ وہ جس اسلامی نظام کی تشریح کرتی ہے اسے متعارف کرانے کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔

دہشت گرد گروپ سے کہہ دیاگیا کہ پاکستان‘ اسلامی جمہوریہ ہے۔ ملک کا آئین واضح طور پر کہتا ہے کہ پاکستان میں تمام قوانین‘ اسلامی تعلیمات کے مطابق ہوں۔ پاکستانی حکام نے جواب میں ٹی ایل پی کے سامنے 3 مطالبات رکھے‘ ان میں حکومت کی بالا دستی تسلیم کرنا‘ دہشت گرد سرگرمیوں کے لئے معافی مانگنا شامل ہیں۔

حکام نے کہاکہ یہ مطالبات مان لئے گئے تو گروپ کو معافی دینے پر غور کیا جاسکتا ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.