طالبان‘لڑکیوں کی تعلیم کے مخالف نہیں:وزیر تعلیم نور اللہ منیر

نور اللہ منیر نے کہاکہ اسلامی علماء کام کر رہے ہیں تاکہ ایک میکانزم مرتب کیا جائے جس کے بعد خواتین اور لڑکیوں کیلئے تعلیم کے حصول کے سلسلہ میں محفوظ اور سازگار ماحول فراہم کرنے کی راہ ہموار ہوسکے۔

کابل: افغانستان کے کارگزار وزیرتعلیم نور اللہ منیر نے کہا ہے کہ طالبان حکومت خواتین کی تعلیم کی مخالف نہیں ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ موجودہ نظام تعلیم میں تبدیلیاں لائی جارہی ہیں اور اس کو اسلامی نقطہ نظر پر مبنی بنایا جائے گا۔ نور اللہ منیر نے کہاکہ لڑکیوں کے لئے تعلیم کا انتظام کیا جائے گا جو کہ اسلامی نقطہ نظر پر مبنی ہوگا۔ بختار نیوز ایجنسی نے کارگذار وزیرتعلیم کے حوالہ سے یہ بات بتائی اور کہا کہ اس سلسلہ میں نور اللہ منیر نے مزید کچھ نہیں بتایا۔

انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نیا نظام تعلیم اسلامی امور کو پیش نظر رکھتے ہوئے مرتب کیا جائے گا۔اس مقصد کیلئے اسلامی علماء کام کر رہے ہیں تاکہ ایک میکانزم مرتب کیا جائے جس کے بعد خواتین اور لڑکیوں کیلئے تعلیم کے حصول کے سلسلہ میں محفوظ اور سازگار ماحول فراہم کرنے کی راہ ہموار ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ اسلامی امور اور افغانستان کی روایات کو پیش نظر رکھتے ہوئے نظام تعلیم مرتب کیا جائے گا۔یہ بات خما نیوز نے بتائی۔

 اساتذہ کو تنخواہوں کی ادائیگی کے تعلق سے اسلامک امارات افغانستان کے کارگذار وزیر تعلیم نور اللہ منیر نے کہا کہ اس سلسلہ میں یونیسف کے ساتھ بات چیت کی جارہی ہے۔ قبل ازیں یونیسف نے اعلان کیا تھا کہ وہ افغانستان کے اساتذہ کیلے راست طورپر فنڈ فراہم کریں گے اور ٹیچرس کو تنخواہوں کی ادائیگی کی راہ ہموار ہوگی۔لیکن آئی ای اے نے کہا ہے کہ تمام امداد ان کی نگرانی میں تقسیم کی جائے گی۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.