پاکستانی پاسپورٹ دنیا کا چوتھا بدترین سفری دستاویز

ہینلی پاسپورٹ انڈیکس 2022 کے مطابق پاکستان 108 ویں مقام پر ہے۔ یہ ادارہ دنیا کے تمام پاسپورٹس کو ان کے رکھنے والوں کو بغیر پیشگی ویزا لئے سفر کی سہولت کے لحاظ سے درجہ بندی کرتا ہے۔

نئی دہلی: پاکستانی پاسپورٹ کو مسلسل تیسرے سال بین الاقوامی سفر کے لئے چوتھا بدترین پاسپورٹ قراردیا گیا ہے۔اس ملک کے لوگ پیشگی ویزا لئے بغیر صرف 31 ممالک کا سفر کرسکتے ہیں۔

ہینلی پاسپورٹ انڈیکس 2022 کے مطابق پاکستان 108 ویں مقام پر ہے۔ یہ ادارہ دنیا کے تمام پاسپورٹس کو ان کے رکھنے والوں کو بغیر پیشگی ویزا لئے سفر کی سہولت کے لحاظ سے درجہ بندی کرتا ہے۔

نیوز انٹرنیشنل کی اطلاع کے مطابق ہینلی اینڈ پارٹنرس کمپنی کا ”ہینلی پاسپورٹ انڈیکس“ 2006 سے مسلسل دنیا کے سب سے زیادہ موافق سفر پاسپورٹس پر نظر رکھ رہا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ کووِڈ 19 کی عالمی وباء کی وجہ سے متعارف کی گئی سفری تحدیدات نے 16 سالہ تاریخ میں حمل و نقل میں سب سے بڑا عالمی خلاء پیدا کیا ہے۔ اس انڈیکس میں عارضی تحدیدات کو شمار نہیں کیا جاتا۔

انڈیکس کے مطابق جاپان اور سنگاپور کے پاسپورٹ رکھنے والے سرفہرست ہیں جو 192 مقامات کا بغیر ویزا لئے سفر کرسکتے ہیں۔ افغان شہری 199 پاسپورٹس کی اس فہرست میں سب سے نیچے ہیں اور وہ لوگ پیشگی ویزا لئے بغیر صرف 26 ممالک کا سفر کرسکتے ہیں۔

2022 کے پہلے سہ ماہی میں 10ممالک کے درجہ میں کوئی ردوبدل نہیں ہوا ہے۔ جنوبی کوریا (190 کے اسکور کے ساتھ) جرمنی کے ساتھ دوسرے مقام پر ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.