چینی وزیر خارجہ کی دوحہ میں طالبان وفد سے ملاقات

وانگ نے امسال جولائی میں افغانستان پر طالبان کے قبضہ سے قبل برادر سے ملاقات کی تھی۔ اس وقت بھی چین نے ای ٹی آئی ایم کا مسئلہ اٹھایا تھا۔

دوحہ؍کابل: چین کے وزیر خارجہ وانگ یی نے دوحہ میں طالبان کے کارگذار نائب وزیر اعظم ملا عبدالغنی برادر سے ملاقات کی ہے۔ افغانستان میں طالبان کے اقتدار پر قبضے کے بعد فریقین کے درمیان یہ پہلی اعلیٰ سطحی ملاقات ہے۔ یہ ملاقات پیر کی شام کو ہوئی۔ طالبان کے سیاسی دفتر کے ترجمان محمد نعیم نے کہا کہ فریقین کے درمیان ہونے والی ملاقات باہمی تعلقات، سیاسی اور اقتصادی امور پر مبنی تھی۔

وانگ یی آج اپنے طالبان کے ہم منصب کارگذار وزیر خارجہ امیر خان متقی سے بھی ملاقات کریں گے۔ دونوں کے درمیان ملاقات سے قبل چینی وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وینبن نے کہا کہ دونوں کے درمیان ہونے والی بات چیت سے افغانستان کی موجودہ صورتحال اور اس سے متعلقہ مسائل پر گہرائی سے بات کرنے اور باہمی خیالات کا تبادلہ کرنے کا موقع ملے گا۔

ژنہوا کے مطابق، وانگ نے افغان وفد کے ساتھ‘ایسٹ ترکستان اسلامک موومنٹ’(ای ٹی آئی ایم) کا مسئلہ بھی اٹھایا اور اس امید کا اظہار کیا کہ افغانستان میں طالبان ای ٹی آئی ایم اور دیگر دہشت گرد تنظیموں کو منہ توڑ جواب دیتے ہوئے ان پر سختی سے کاروائی کرنے کے لیے مؤثر تدابیر پر کام کرے گا۔

وانگ نے امسال جولائی میں افغانستان پر طالبان کے قبضے سے قبل برادر سے ملاقات کی تھی۔ اس وقت بھی چین نے ای ٹی آئی ایم کا مسئلہ اٹھایا تھا۔ یہ ملاقات چین کے شہر تیانجن میں ہوئی تھی۔ چین نے رواں سال 15 اگست کو افغانستان پر طالبان کے قبضے کے بعد سے کابل میں اپنے سفارت خانے کھلے رکھے ہیں۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.