تنزانیہ کے مصنف عبدالرزاق کو ادب میں نوبل انعام

ان کو پہلی عالمی جنگ کے دوران نوآبادیاتی مشرقی آفریقہ پر 1994 کے ناول ”پیراڈائز“ سے شہرت ملی تھی، جس کوفکشن کے لئے بوکر پرائز کے لئے مختصر فہرست میں شامل کیا گیا تھا۔

کینٹ: ایوارڈ عطا کرنے والے ادارہ نے بتایا کہ تنزانیہ کے مصنف عبدالرزاق گرناح نے ادب میں 2021 کا نوبل انعام جیت لیا۔

یہ پُروقار ایوارڈ سویڈن کی اکیڈیمی کی جانب سے عطا کیا گیا اور یہ بتایا گیا کہ گرنا ح کو یہ اعزاز اس لئے عطا کیا گیا کیونکہ انہوں نے نوآبادیات کے اثرات اور تہذیبوں و خطوں کے درمیان خلیج میں پناہ گزینوں کے انجام کے بارے میں پُراثر انداز میں تحریر کیا ہے۔

گرناح جو زنزی بار میں پیدا ہوئے تھے اور انگلینڈ کو اپنا مسکن بنایا تھا حال ہی میں یونیورسٹی آف کینٹ میں مابعد نوآبادیاتی ادب کے پروفیسر کے طور پر سبکدوش ہوئے ہیں۔ انہوں نے 10 ناولوں اور بے شمار افسانوں کی اشاعت عمل میں لائی ہے۔

ان کو پہلی عالمی جنگ کے دوران نوآبادیاتی مشرقی آفریقہ پر 1994 کے ناول ”پیراڈائز“ سے شہرت ملی تھی، جس کوفکشن کے لئے بوکر پرائز کے لئے مختصر فہرست میں شامل کیا گیا تھا۔

گرنا کو سویڈن کی اکیڈیمی کی جانب سے فون کال اس وقت موصول ہوا جب وہ جنوب مشرقی انگلینڈ میں واقع ان کے گھر کے باورچی خانہ میں تھے۔ رائٹرس نے جب ان سے سوال کیا کہ ان کو پرائز جیتنے پر کیسا محسوس ہوا گرنا ح نے کہا ”مجھے کافی اچھا محسوس ہوا اور یہ حیرت انگیز لگا“۔ یہ پُروقار اعزاز گول میڈل اور 10 ملین سوئیڈش کرونار (1.14 ملین امریکی ڈالرس) پر مشتمل ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.