اسرائیلی فوج کی فائرنگ میں 4 فلسطینی شہید

مغربی کنارہ کے کئی گاوں میں اس وقت اسرائیلی جارحیت عروج پر ہے۔ قابض فورس کے عہدیدار رات گئے گھروں پر چھاپہ مار کر نوجوانوں کو حراست میں لے لیتے ہیں جن میں سے اکثر کی گولیاں لگی تشدد زدہ نعشیں ملتی ہیں۔

یروشلم: اسرائیلی فوج نے مقبوضہ مغربی کنارہ کے علاقہ میں ایک جھڑپ کے دوران کم از کم 4 فلسطینی شہریوں کو ہلاک کیا۔ فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق جینین کے علاقے میں شدید جھڑپیں جاری ہیں۔ اسرائیلی وزیراعظم نفتالی بینیٹ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اسرائیلی فورسس نے ’حماس کے دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کیا جو جلد ہی دہشت گرد حملے کرنے والے تھے۔

‘انہوں نے ہلاکتوں کا ذکر نہیں کیا اور اسرائیلی فوج کے ترجمان نے اس دھاوے کے حوالے سے کوئی بات نہیں کی۔فلسطین کی وزارت صحت نے کہا کہ مغربی کنارہ کے گاؤں بیدو میں 3 فلسطینی ہلاک ہوئے اور بورکن گاؤں کے ایک فلسطینی شہری کو گولی ماردی گئی جو ہسپتال پہنچ کر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہو گیا۔

اسرائیل اور فلسطین کے میڈیا کے مطابق علاقہ میں ہفتہ کو شروع ہونے والی جھڑپیں اتوار کو بھی جاری ہیں۔ عالمی خبر رساں ادارہ کے مطابق قابض اسرائیلی فوج نے یروشلم کے نزدیک مغربی کنارے میں ایک گاوں پر چھاپہ مار کارروائی کی جس کے دوران فائرنگ کرکے احمد زہران، محمد حمیدان اور زکریا بدوان نامی نوجوانوں کو شہید کردیا۔

اسی طرح اسرائیلی فوج نے جنوب مغربی گاوں برقن میں بھی ایک گھر پر چھاپہ مار کر نوجوان کو حراست میں لینے کے بعد ماورائے عدالت قتل کردیا۔ شہید ہونے والے نوجوان کی شناخت 22 سالہ اسامہ کے نام سے ہوئی ہے۔ اسی علاقہ میں ایک اور فلسطینی نوجوان کے شہید ہونے کی بھی اطلاع ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ نوجوان مسلح تھے اور چھاپہ کے دوران جدید اسلحے سے فوجی عہدیداروں پر فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں 2 عہدیدار زخمی بھی ہوئے۔ جوابی فائرنگ میں فلسطینی نوجوان بھی ہلاک ہو گئے۔

واضح رہے کہ مغربی کنارہ کے کئی گاوں میں اس وقت اسرائیلی جارحیت عروج پر ہے۔ قابض فورس کے عہدیدار رات گئے گھروں پر چھاپہ مار کر نوجوانوں کو حراست میں لے لیتے ہیں جن میں سے اکثر کی گولیاں لگی تشدد زدہ نعشیں ملتی ہیں۔

ذریعہ
اے ایف پی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.