جاسوسی کے الزام میں گرفتار اسرائیلی جوڑے کی جیل سے رہائی اور وطن واپسی

رہائی کے تعلق سے صدر ترکی کی جانب سے اشتراک وتعاون پر اسرائیل نے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ صدر کی دلچسپی اور مدد کی وجہ رہائی کی راہ ہموار ہوئی ہے۔

تل ابیب: اسرائیل کے ایک جوڑے کو جنہیں جاسوسی کے الزام میں ترکی کے حکام نے گرفتار کرکے جیل میں رکھا تھا رہا کردئے جانے پر اسرائیل نے ترکی صدر رجب طیب اردغان سے اظہار تشکر کیا ہے۔

نٹالی اور مورڈی اوکن کو استنبول کے محل کی تصاویر لینے پر گرفتار کرلیا گیا تھا۔

رہائی کے تعلق سے صدر ترکی کی جانب سے اشتراک وتعاون پر اسرائیل نے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ صدر کی دلچسپی اور مدد کی وجہ رہائی کی راہ ہموار ہوئی ہے۔صدر کے محل کی تصاویر لینے پر ان کے تعلق سے جاسوسی کا شبہ کیا گیا۔

آخر کار رجب اردغان کی مدد کی وجہ انہیں جمعرات کی صبح کو رہا کردیا گیا اور وہ ایک خانگی جٹ طیارے کے ذریعہ اسرائیل واپس ہوگئے۔

عرب نیوز کے مطابق تقریبا ایک مہینہ کے بعد اس تنازعہ کی یکسوئی ہوئی۔سمجھا جارہا تھا کہ انہیں کئی برسوں تک ترکی کی جیل میں رکھا جائے گا۔

لیکن صدر کی کوششوں کی وجہ یہ افراد اپنے گھر اسرائیل پہنچ گئے۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.