عدن کے گورنر قاتلانہ حملہ میں بال بال بچ گئے‘ 5 افراد ہلاک

بارود سے لدی گاڑی میں دھماکہ بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ حکومت کے گورنر احمد لملس اور وزیر ماحولیات سلیم السقوطری کی گاڑیوں کے قافلہ کے گزرنے کے بعد ہوا۔

صنعا: یمن کے شہر عدن میں گورنر کے قافلے پر کار بم دھماکے کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک ہوگئے۔عرب میڈیا کے مطابق یمن کے شہر عدن میں گورنر کے قافلہ کو کار بم دھماکے میں نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک ہوگئے تاہم گورنر محفوظ رہے، حملہ کے وقت وزیر ماحولیات بھی گورنر کے ہمراہ تھے تاہم کار بم دھماکے میں وہ بھی محفوظ رہے۔

 ایک سکیورٹی عہدیدار نے خبر رساں ادارے رائٹر کو بتایا کہ عدن کے گورنر اور ایک حکومتی وزیر اسی علاقہ میں تھے تاہم وہ محفوظ رہے۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق بارود سے لدی گاڑی میں دھماکہ بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ حکومت کے گورنر احمد لملس اور وزیر ماحولیات سلیم السقوطری کی گاڑیوں کے قافلہ کے گزرنے کے بعد ہوا۔

 فوجی ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ خودکش بم دھماکے میں 3 عہدیداروں سمیت 5 افراد زخمی بھی ہوئے جن میں ایک بچہ بھی شامل ہے۔ دھماکہ میں بال بال بچنے والے عدین کے گورنر احمد لملاس علیحدگی پسند جماعت سدرن ٹرانزیشنل کونسل کے جنرل سکریٹری بھی ہیں جب کہ وزیر زراعت سلیم السقاطری بھی اس جماعت کے رکن تھے۔

علیحدگی پسند جماعت سدرن ٹرانزیشنل کونسل متحدہ عرب امارات کی حمایت یافتہ پارٹی ہے اور حوثی باغیوں سے مزاحمت میں کلیدی کردار ادا کر رہی ہے۔یاد رہے کہ یمن میں 2015 سے اتحادی افواج اور حوثی باغیوں کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے جس میں 2 لاکھ سے زائد افراد ہلاک اور 10 لاکھ کے قریب بے گھر ہوگئے ہیں۔

ذریعہ
ایجنسیز

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.