متھرا کی شاہی عیدگاہ میں کرشنا کی مورتی نصب کرنے ہندومہاسبھا کی دھمکی

ہندو مہا سبھا کے لیڈر راجیہ شری چودھری نے بتایا کہ 6 دسمبر کو مہاجل ابھیشک کے بعد مجسمہ نصب کیا جائے گا تاکہ اس مقام کو پاک کیا جاسکے۔

متھرا(اترپردیش): اکھیل بھارت ہندو مہاسبھا نے اعلان کیا ہے کہ وہ لارڈ کرشنا کی اصل جائے پیدائش پر ان کا ایک مجسمہ نصب کرے گی جو اس کے دعویٰ کے مطابق یہاں ایک مسجد کے قریب واقع اہم مندر میں موجود ہے۔

ہندو مہا سبھا کے لیڈر راجیہ شری چودھری نے بتایا کہ 6 دسمبر کو مہاجل ابھیشک کے بعد مجسمہ نصب کیا جائے گا تاکہ اس مقام کو پاک کیا جاسکے۔

دائیں بازو کی تنظیم نے 1992 میں ایودھیا میں بابری مسجد کی شہادت کی تاریخ چنی ہے۔ شاہی عیدگاہ کے اندر پوجا پاٹ کرنے کی دھمکی مہاسبھا نے ایک ایسے وقت دی ہے جب مقامی عدالتوں میں کئی درخواستوں کی سماعت ہورہی ہے جن کے ذریعہ کاٹرا کیشو دیو مندر کے قریب واقع سترہویں صدی کی مسجد کو ہٹانے کی گذارش کی گئی ہے۔

ہندومہاسبھا کے لیڈر راجیہ شری چودھری نے اس بات کی تردید کی کے 1992 کے واقعہ اور تنظیم کے متھرا منصوبہ کے درمیان کوئی تعلق ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقدس دریاؤں کا پانی مہاجل ابھیشک کیلئے لایا جائے گا۔ چودھری نے کہا کہ اب تک ہمیں صرف سیاسی آزادی ملی ہے لیکن روحانی، اقتصادی اور ثقافتی آزادی حاصل کرنا ابھی باقی ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.