ٹرمپ افغانستان سے ’ذلت آمیز‘ انخلا کے ذمہ دار : بائیڈن

وائٹ ہاؤس کے اسٹیٹ ڈائننگ روم سے ایک ٹیلی ویژن خطاب میں جوبائیڈن نے طالبان کی تیز رفتار پیشرفت کے خلاف معزول افغان حکومت کی نااہلی پر تنقید کی جس کے باعث امریکہ اور اس کے نیٹو اتحادیوں کو جلد بازی اور ذلت آمیز راستہ اختیار کرنے پر مجبور کیا۔

واشنگٹن: افغانستان سے ذلت آمیز انخلاء کے لئے سابق صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے امریکی صدر جوبائیڈن نے افغانستان سے انخلا کی آخری تاریخ کے فیصلے پر ہونے والی تنقید کو مسترد کردیا جس کے باعث کابل میں 100 سے 200 امریکیوں سمیت معاونت فراہم کرنے والے افغان شہری ملک سے باہر نہیں جاسکے۔

ڈان کی رپورٹ کے مطابق وائٹ ہاؤس کے اسٹیٹ ڈائننگ روم سے ایک ٹیلی ویژن خطاب میں جوبائیڈن نے طالبان کی تیز رفتار پیشرفت کے خلاف معزول افغان حکومت کی نااہلی پر تنقید کی جس کے باعث امریکہ اور اس کے نیٹو اتحادیوں کو جلد بازی اور ذلت آمیز راستہ اختیار کرنے پر مجبور کیا اور سابق امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے کردار پر بھی تنقید کی۔

جوبائیڈن نے کہا کہ ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے طے شدہ معاہدے کے تحت ’گزشتہ برس 5 ہزار قیدیوں کی رہائی کی اجازت دی گئی جن میں طالبان کے بعض جنگی کمانڈر بھی شامل تھے جنہوں نے ابھی کنٹرول سنبھالا ہے‘۔انہوں نے کہا کہ جب میں نے صدارتی دفتر سنبھالا، طالبان 2001 کے بعد سے اپنی مضبوط ترین فوجی پوزیشن میں تھے جو ملک کے تقریبا آدھے حصے کو کنٹرول کر رہے تھے۔

جوبائیڈن نے کہا کہ عہدیداروں کا خیال ہے کہ 100 سے 200 امریکی افغانستان میں ہیں جس میں چند ملک چھوڑنے کا ارادہ رکھتے ہیں، ان میں سے زیادہ تر کے پاس دہری شہریت ہے اور وہ طویل عرصے سے رہائش پذیر تھے۔انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ ان کو نکالنے کے لیے پرعزم ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.