امریکہ میں اومیکرون کا پہلا کیس

ڈاکٹر فاوچی نے کہا کہ متاثرہ شخص نے ویکسین لگوا رکھی تھی لیکن اس نے ابھی بوسٹر شاٹ نہیں لگوایا تھا اور اس نے کووڈ کی ہلکی علامات کی شکایت کی تھی۔

واشنگٹن: امریکہ میں کرونا کی نئی قسم اومکرون وائرس کا پہلا کیس لاس اینجلس میں سامنے آیا ہے جو ایسے شخص میں تشخیص کیا گیا ہے جس نے کووڈ 19 سے بچاؤ کی ویکسین لگوا رکھی تھی۔ وائٹ ہاوس کی جانب سے اس بات کا اعلان بدھ کے روز کیا گیا جبکہ سائنسدان ابھی وائرس سے لاحق نئے خطرات پر تحقیق کر رہے ہیں۔

متعدی امراض اور الرجی کے قومی انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر انتھونی فاوچی نے کہا ہے کہ وائرس کی نئی قسم سے متاثر ہونے والا شخص 22 نومبر کو جنوبی افریقہ سے امریکہ واپس آیا تھا اور اس میں اومکرون وائرس کی تشخیص 29 نومبر کو ہوئی۔

ڈاکٹر فاوچی نے کہا کہ متاثرہ شخص نے ویکسین لگوا رکھی تھی لیکن اس نے ابھی بوسٹر شاٹ نہیں لگوایا تھا اور اس نے کووڈ کی ہلکی علامات کی شکایت کی تھی۔

یاد رہے کہ نئے وائرس کی دریافت کے بعد صدرجو بائیڈن کی انتظامیہ نے جنوبی افریقہ پر سفری پابندیاں عائد کی تھیں۔ ڈاکٹر فاوچی نے نامہ نگاروں کو وائٹ ہاوس میں بتایا کہ متاثرہ شخص کی حالت بہتر ہو رہی ہے اور یہ مثال اس بات کو عیاں کرتی ہے کہ لوگوں کو ویکسین کے علاوہ بوسٹر شاٹس بھی لگوانے چاہیں۔ انہوں نے زور دیا کہ بوسٹر شاٹ لگوانا بہت ضروری ہے۔

ذریعہ
ایجنسیز

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.