امریکہ میں غیرملکی مسافرین کیلئے سخت پابندیاں

وائٹ ہاؤس کے مطابق بیرونی دنیا سے امریکہ آنے والے تمام مسافروں کو اپنی روانگی سے ایک دن قبل کرائے گئے کووڈ 19 ٹیسٹ کا منفی نتیجہ پیش کرنا ہو گا۔

واشنگٹن: امریکہ کے صدر جو بائیڈن نے جمعرات کو بیرون ممالک سے آنے والے تمام مسافروں کے لیے کووڈ 19 کے ٹیسٹ کرانے کی نئی پابندی اور دوسرے ممالک کو عالمی وبا سے نمٹنے کے لیے ویکسین کی فراہمی کا اعلان کیا۔

نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ میں ایک خطاب میں صدر نے موسم سرما کے دوران کووڈ 19 کے متعلق منصوبوں کے بارے میں بتایا، جب کہ امریکہ میں وائرس کی نئی قسم اومیکرون کا پہلا مصدقہ کیس بھی سامنے آ گیا ہے۔

صدر بائیڈن نے کرونا وائرس سے نمٹنے کی تدابیر کا اعلان ایسے وقت میں کیا ہے جب وائرس کی جنوبی افریقہ میں دریافت ہونے والی نئی قسم اومیکرون نے دنیا کے لیے عالمی وبا سے نبرد آزما ہونے کی راہ میں ایک اور چیلنج لا کھڑا کیا ہے۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق بیرونی دنیا سے امریکہ آنے والے تمام مسافروں کو اپنی روانگی سے ایک دن قبل کرائے گئے کووڈ 19 ٹیسٹ کا منفی نتیجہ پیش کرنا ہو گا۔

خیال رہے کہ اب تک کی عائد پابندیوں کے مطابق امریکہ آنے والے مسافر اپنی روانگی سے تین روز قبل تک کووڈ نائنٹین کا ٹیسٹ کروا سکتے تھے۔ بیرون ممالک سے واپس آنے ولے امریکی شہری بھی نئے ضابطے کے پابند ہوں گے۔ وائٹ ہاؤس کے مطابق بائیڈن انتظامیہ اگلے ایک سو روز میں ویکسین کی 200 ملین خوراکیں دوسرے ممالک کو مہیا کرے گی۔

امریکہ کے اندر آگاہی کی مہم کے ذریعے لوگوں کی حوصلہ افزائی کے جائے گی کہ وہ بوسٹر شاٹس لگوائیں۔انتظامیہ کا ارادہ ہے کہ صحت کی انشورنس رکھنے والے تمام لوگوں کو گھروں پر وائرس ٹیسٹ کرنے کی کٹس مہیا کی جائیں۔ اس کے علاوہ وفاقی حکومت وائرس سے زیادہ متاثر ہونے والی ریاستوں کے بہت مصروف اسپتالوں کی ایمرجنسی ٹیموں کے ذریعہ مدد کرے گی۔

ذریعہ
ایجنسیز

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.