کابل حملہ کے منصوبہ ساز کو ہلاک کرنے امریکہ کا دعویٰ

امریکی وزارت دفاع نے بتایا ہے کہ کابل ایرپورٹ پر خودکش حملہ کے ذمہ دار داعش(خراسان) سے انتقام لینے کے امریکی صدر جو بائیڈن کے عزم پر 48 گھنٹے کے اندر عمل درآمد کرتے ہوئے امریکی فوج نے ہفتہ کے روز ڈرون حملہ کرکے حملہ کے ”منصوبہ ساز“ کو ہلاک کردیا۔

پنٹگان: پینٹگان کا کہنا ہے کہ کابل ایرپورٹ پر خودکش حملہ میں ملوث داعش کا ایک منصوبہ ساز‘امریکی ڈرون حملہ میں مارا گیا۔

جمعرات کے روزہونے والے خودکش حملہ میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر175ہوگئی ہے جن میں 13 امریکی بھی شامل ہیں۔

امریکی وزارت دفاع نے بتایا ہے کہ کابل ایرپورٹ پر خودکش حملہ کے ذمہ دار داعش(خراسان) سے انتقام لینے کے امریکی صدر جو بائیڈن کے عزم پر 48 گھنٹے کے اندر عمل درآمد کرتے ہوئے امریکی فوج نے ہفتہ کے روز ڈرون حملہ کرکے حملہ کے ”منصوبہ ساز“ کو ہلاک کردیا۔

امریکی سنٹرل کمانڈ کے کیپٹن بل اربن نے ایک بیان میں کہا ”ڈرون حملہ افغانستان کے صوبہ ننگرہار میں کیا گیا اور ابتدائی اشارے ہیں کہ ہم نے ہدف کو ٹھیک ٹھیک نشانہ بنا کر ہلاک کر دیا“۔

انہوں نے مزید کہا ”ہم جانتے ہیں کہ اس حملہ میں کوئی شہری ہلاک نہیں ہوا ہے“۔

واضح رہے کہ داعش نے جمعرات کو کابل کے حامد کرزئی انٹرنیشنل ایرپورٹ پر خودکش بم دھماکہ کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ اس حملہ میں 13 امریکی اہلکاروں سمیت 175 سے زیادہ افراد مارے گئے تھے۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے حملہ کے ذمہ داروں سے انتقام لینے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا ”جن لوگوں نے یہ حملہ کیا اورجو امریکہ کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں، یہ جان لیں کہ ہم انہیں معاف نہیں کریں گے۔

ہم تمہارا پیچھا کریں گے اور تمہیں اس کی قیمت چکانی پڑے گی“۔مریکی وزارت دفاع کے ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ صدر بائیڈن نے ڈرون حملہ کی اجازت دی اور وزیر دفاع لائیڈ آسٹن کے حکم پر یہ کارروائی انجام دی گئی۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.