کابل کے نئے سیکوریٹی سربراہ خلیل حقانی‘ نامزد دہشت گرد

امریکی حکومت نے طالبان کو کبھی بھی دہشت گرد تنظیم قرارنہیں دیا لیکن القاعدہ اور پاکستانی انٹلیجنس سے قریبی تعلقات رکھنے والے حقانی نیٹ ورک کو دہشت گرد قراردیا گیا۔

نئی دہلی/ واشنگٹن: افغان دارالحکومت کابل میں طالبان کے نئے خودساختہ سیکوریٹی سربراہ خلیل حقانی (حقانی نیٹ ورک) کو امریکی حکومت نے 10 برس قبل دہشت گرد قراردیا تھا اور ان کی گرفتاری کے لئے 5 ملین امریکی ڈالر کے انعام کا اعلان کیا تھا۔

حقانی نیٹ ورک کے پاکستانی آئی ایس آئی سے قریبی تعلقات ہیں۔

2011 میں اس وقت کے اعلیٰ امریکی فوجی عہدیدار مائیک مُلن نے امریکی کانگریس سے کہا تھا کہ حقانی نیٹ ورک‘ پاکستانی آئی ایس آئی کا ایک ہتھیار ہے۔

امریکی حکومت نے طالبان کو کبھی بھی دہشت گرد تنظیم قرارنہیں دیا لیکن القاعدہ اور پاکستانی انٹلیجنس سے قریبی تعلقات رکھنے والے حقانی نیٹ ورک کو دہشت گرد قراردیا گیا۔

خلیل حقانی‘ حقانی گروپ کے چیف آف آپریشنس رہ چکے ہیں۔ 2018 میں انہوں نے امریکی فورسس اور افغان شہریوں پر خودکش بم حملوں کی منظوری دی تھی۔

سوویت حملہ کے خلاف طالبان کو امریکہ جس وقت ٹریننگ دے رہا تھا اس وقت خلیل حقانی امریکی سی آئی اے کے پارٹنر تھے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.