کواڈ عالمی بہتری کیلئے ایک قوت کے طورپر کام کرے گا: مودی

مودی نے کہا ، "کواڈ نے اپنی مشترکہ جمہوری اقدار کی بنیاد پر اپنی مثبت سوچ اور نقطہ نظر کے ساتھ آگے بڑھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ٹیکنالوجی، عالمی سلامتی، موسمیاتی تبدیلی یا کووڈ کے خلاف جنگ، ان تمام سیاق و سباق پرمجھے یہاں بات کرنے میں خوشی ہوگی۔

واشنگٹن: وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ امریکہ، ہندوستان، جاپان اور آسٹریلیا کا کواڈرینگولر فریم ورک (کواڈ) عالمی بہتری کیلئے ایک قوت کے طور پر کام کرے گا اور انہیں یقین ہے کہ کواڈ ممالک انڈو پیسیفک خطہ سمیت دنیا بھر میں امن اور خوشحالی کو یقینی بنانے میں مدد کریں گے۔

مودی نے کہا، "2004 کی سونامی کے بعد چاروں ممالک پہلی مرتبہ ہند بحرالکاہل خطہ کی مدد کیلئے اکٹھے ہوئے ہیں۔ کواڈ پارٹنر کی حیثیت سے ہم آج دنیا کی مدد کر رہے ہیں جو کووڈ 19 وباسے نبرد آزما ہے۔ ہمارا کواڈ ویکسین کا اقدام انڈو پیسفک علاقائی ممالک کے لیے ایک بڑی امداد ہوگی۔”

انہوں نے کہا ، "کواڈ نے اپنی مشترکہ جمہوری اقدار کی بنیاد پر اپنی مثبت سوچ اور نقطہ نظر کے ساتھ آگے بڑھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ٹیکنالوجی، عالمی سلامتی، موسمیاتی تبدیلی یا کووڈ کے خلاف جنگ، ان تمام سیاق و سباق پرمجھے اپنے دوستوں کے ساتھ یہاں بات کرنے میں خوشی ہوگی۔اس سے قبل وزیراعظم نے کواڈ میٹنگ کی میزبانی پر امریکی صدر جو بائیڈن کا شکریہ ادا کیا۔

کواڈ کی پہلی میٹنگ ورچوئل فارمیٹ میں مارچ میں ہوئی تھی۔ آج کی اس ملاقات سے پہلے وزیر اعظم مودی نے جمعرات کو چار رکنی اتحاد کے دو اہم اراکین آسٹریلیا اورجاپان کے وزرائے اعظم سے الگ الگ دوطرفہ ملاقاتیں کرکے آزاد ، کھلے اورخوشحال ہند بحرالکاہل خطے کے ہدف کو حاصل کرنے کے لیے تعاون کو بڑھا نے کا عزم ظاہرکیاتھا۔

جاپان اور آسٹریلیا کے وزرائے اعظم نے امریکی صدر کے ساتھ بھی دوطرفہ میٹنگ کی۔ سمجھا جاتا ہے کہ اس طرح کواڈچوٹی میٹنگ کے پہلے ہی رکن ممالک کے درمیان ایجنڈے پر تبادلہ خیال کرکے ایک اصولی اتفاق رائے قائم ہوگئی ہے۔ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ چین کے جارحانہ موقف کو روکنے کے لیے اس سے مینوفیکچرنگ بیس کو ڈی سنٹرلائزکرنے، سپلائی چین پر چینی تسلط کو ختم کرنے اور سیکورٹی اقدامات پر تبادلہ خیال ہوگا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.