ہند ۔امریکہ تعلقات کی تاریخ میں نئے باب کا آغاز: جو بائیڈن

بائیڈن نے کہاکہ امریکہ ہندوستان تعلقات کی تاریخ کا ایک نیا باب شروع کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا، "مجھے طویل عرصے سے یقین ہے کہ ہندوستان اور امریکہ کے تعلقات کئی عالمی چیلنجوں سے نمٹنے میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں۔

واشنگٹن: امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا کہ دنیا کےسب سے بڑے جمہوری ملک ہندوستان اور امریکہ دوطرفہ تعلقات کی تاریخ میں نیا باب شروع کر رہے ہیں۔ بائیڈن نے کہا، "ہندوستان اور امریکہ کے قریبی اور مضبوط تعلقات سے پوری دنیا کو فائدہ ہوسکتا ہے اور میرے خیال میں ایسا ہونا شروع ہو گیا ہے۔

آج ہم امریکہ ہندوستان تعلقات کی تاریخ کا ایک نیا باب شروع کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا، "مجھے طویل عرصے سے یقین ہے کہ ہندوستان اور امریکہ کے تعلقات کئی عالمی چیلنجوں سے نمٹنے میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں۔ 2006 میں نائب صدر بننے کے بعد میں نے کہا تھا کہ 2020 تک ہندوستان اور امریکہ دنیا کے قریب ترین ممالک میں شامل ہوں گے۔”

انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ مل کر کووڈ کی وبا کو ختم کر سکتے ہیں۔ آب و ہوا کی تبدیلی اور ہند بحرالکاہل کے خطے کو محفوظ بنانے کے بارے میں بھی وہ وزیر اعظم کے ساتھ تبادلہ خیال کریں گے۔ انہوں نے کہا، "وزیر اعظم اور میں اس بات پر تبادلہ خیال کریں گے کہ ہم کووڈ 19 سے لڑنے کے لیے مزید کیا کر سکتے ہیں اور دنیا کے سامنے آنے والے آب و ہوا کے چیلنجوں کاسامنا اپنے کواڈ اتحادیوں کے ساتھ ہندبحرالکاہل خطے کا استحکام کیسے یقینی بنا سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا، ’’جمہوری اقدار کو برقرار رکھنا ہماری مشترکہ ذمہ داری ہے۔ تنوع کے لیے ہمارا مشترکہ عزم ہے۔ ملک میں رہنے والے تقریبا 40 لاکھ ہندنژاد امریکیوں کا امریکہ کی ترقی اور مضبوط بنانے میں تعاون ہے۔

امریکی صدر نے کہا ، "اگلے ہفتہ مہاتما گاندھی کی سالگرہ ہے اور یہ موقع ہم سب کو یاد دلاتا ہے کہ عدم تشدد، احترام ، رواداری کا ان کا پیغام آج شاید پہلے سے کہیں زیادہ اہم ہے۔ لہذا میں آج وزیر اعظم کے ساتھ اپنی بات چیت کا منتظر ہوں۔ شکریہ۔”

بائیڈن نے اس سے قبل ایک ٹویٹ کرکےکہا کہ آج صبح وہ وائٹ ہاؤس میں ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی کی دوطرفہ ملاقات کی میزبانی کریں گے۔ وہ دونوں ممالک کے مابین گہرے تعلقات کو مزید مستحکم کرنے اور آزاد اور کھلے ہندبحرالکاہل خطے کے قیام اور کووڈ وباو موسمیاتی تبدیلی کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے مل کر کام کرنے کے منتظر ہیں۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.