رمضان میں نظام الدین مرکز میں مسجد کی کشادگی، دہلی پولیس کا اتفاق

واضح رہے کہ 2020 میں تبلیغی جماعت کے ارکان کے کووِڈ19 سے متاثر پائے جانے کے بعد نظام الدین مرکز میں عوام کا داخلہ بند کردیا گیا تھا۔

نئی دہلی: دہلی پولیس نے دہلی ہائی کورٹ کو بتایا ہے کہ ماہ ِ رمضان کے دوران نظام الدین مرکز میں مسجد بنگلہ والی کو کھولنے کی اجازت دی جائے گی جو عدالت کے سابقہ حکم میں بیان کی گئی شرائط و ضوابط کے تابع رہے گی جن کی تحت شب ِ برأت کے موقع پر مصلیوں کو نماز اور عبادت کی اجازت دی گئی تھی۔

واضح رہے کہ 2020 میں تبلیغی جماعت کے ارکان کے کووِڈ19 سے متاثر پائے جانے کے بعد نظام الدین مرکز میں عوام کا داخلہ بند کردیا گیا تھا۔

ہائی کورٹ نے 16 مارچ 2022 کو احکام صادر کرتے ہوئے شب ِبرأت کے موقع پر مسجد کی 4 منزلوں بشمول نچلی منزل کی دوبارہ کشادگی کی اجازت دی تھی اور حکم دیا تھا کہ مرکز کا انتظامیہ اس بات کو یقینی بنائے گا کہ کووِڈ پروٹوکول اور سماجی فاصلہ کی برقراری کے اصولوں پر پوری طرح عمل کیا جائے۔

بعدازاں ہائی کورٹ نے درخواست گزار دہلی وقف بورڈ سے کہا تھا کہ وہ مقدس ماہ ِ رمضان میں مسجد کی دوبارہ کشادگی کے لئے درخواست پیش کرتے ہوئے پولیس سے رجوع ہو۔

اس درخواست کے جواب میں دہلی پولیس نے نظام الدین مرکز کے انتظامیہ کو ہدایت دی ہے کہ وہ باب الداخلہ اور نکاسی کے گیٹس کے علاوہ ہر منزل کی سیڑھیوں پر سی سی ٹی وی کیمرے دوبارہ نصب کرے جو لاپتہ ہوگئے ہیں۔

پولیس نے انتظامیہ کو یہ بھی ہدایت دی کہ وہ ایک نوٹس بورڈ آویزاں کرے جس پر بیرونی عقیدت مندوں کے داخلہ کے لئے شرائط و ضوابط تحریر ہوں۔

اس معاملہ کی سماعت آج جسٹس جسمیت سنگھ کی واحد رکنی بنچ پر مقرر تھی لیکن اسے کل 2:30 بجے تک ملتوی کردیا گیا ہے۔ دہلی وقف بورڈ نے نظام الدین مرکز میں جو 31 مارچ 2020 سے بند ہے‘ پابندیوں میں نرمی لانے کی درخواست داخل کی تھی۔

عدالت نے گزشتہ سال نومبر میں نظام الدین مرکز کا مشترکہ معائنہ کرنے کا حکم دیا تھا تاکہ 3 علاقوں کی نشاندہی کی جاسکے جن میں مسجد‘ اجتماع گاہ اور ہاسٹل شامل ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button