روس یوکرین کے مشرقی حصہ میں نئے حملوں کی تیاری کررہا ہے: یوکرین صدر زیلنسکی

زیلنسکی نے کہا کہ روس ازسرنو حملہ کرنے کے لیے ڈون باس علاقے میں اپنی افواج تعینات کر رہا ہے۔ برطانوی اخبار دی گارڈین نے زیلنسکی کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں کہا کہ ان کی حکومت ڈونباس پر نئے حملوں کے لیے روسی افواج کی تعیناتی کو دیکھ رہی ہے

کیف: یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے جمعرات کو روس کے ساتھ بات چیت کے تعلق سے شکوک کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یوکرین ڈونباس کے مشرقی علاقے میں حملوں کی نئی لہر کی تیاری کر رہا ہے۔ زیلنسکی نے اپنے تازہ ترین ویڈیو پیغام میں کہا،ہاں، ہمارے پاس مذاکرات کا عمل ہے، لیکن یہ صرف الفاظ ہیں، کچھ بھی ٹھوس نہیں ہے۔

انہوں نے کہا، ’’کیف اور چیرنی ہیو سے روسی فوجیوں کے مبینہ انخلاء اور ان علاقوں میں قبضہ کرنے والوں کی سرگرمیوں میں کمی کے بارے میں بھی بات چیت جاری ہے۔ یہ پیچھے ہٹنا نہیں ہے، یہ ہمارے محافظوں کے کام کا نتیجہ ہے، جنہوں نے انہیں پیچھے دھکیل دیا۔

انہوں نے کہا کہ روس ازسرنو حملہ کرنے کے لیے ڈون باس علاقے میں اپنی افواج تعینات کر رہا ہے۔ برطانوی اخبار دی گارڈین نے مسٹر زیلنسکی کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں کہا کہ ان کی حکومت ڈونباس پر نئے حملوں کے لیے روسی افواج کی تعیناتی کو دیکھ رہی ہے اور ہم اس کے لیے تیاری کر رہے ہیں۔

اس سے قبل ڈونیٹسک پیپل ریپبلک کے رہنما ڈینس پوشیلین نے بدھ کے روز کہا تھا کہ جارحانہ کارروائیاں تیز ہو رہی ہیں۔ وہیں روس نے دعویٰ کیا تھا کہ اس کے فوجی کچھ علاقوں سے واپس چلے جائیں گے اور ڈون باس علاقے کو "آزاد” کرنے پر توجہ مرکوز کریں گے۔ ان دعوؤں کے باوجود روسی فوج یوکرین کے چیرنی ہیو اور کیف کے کچھ حصوں پر گولہ باری کر رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں
ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button