سابق افغان وزیر اب جرمنی میں کورئیر مین

سید سادات کا کہنا ہے کہ وطن میں کچھ لوگ مجھ پر تنقید کرسکتے ہیں کہ دوسال تک حکومت میں خدمت انجام دینے کے بعد میں یہ کام کیوں کررہا ہوں لیکن روزگار بہرحال روزگار ہوتا ہے مجھے یہ کام کرتے ہوئے بالکل شرمندگی نہیں ہے۔

برلن: سیدسادات جو گذشتہ سال دسمبر میں جرمنی منتقل ہونے سے قبل افغان حکومت میں وزیر اطلاعات ہوا کرتے تھے اب مشرقی شہر لیپ زگ میں ایک ڈلیوری مین ہیں، وہ ایک بہتر مستقبل کی تلاش میں جرمنی آئے ہیں۔

سید سادات کا کہنا ہے کہ وطن میں کچھ لوگ مجھ پر تنقید کرسکتے ہیں کہ دوسال تک حکومت میں خدمت انجام دینے کے بعد میں یہ کام کیوں کررہا ہوں لیکن روزگار بہرحال روزگار ہوتا ہے مجھے یہ کام کرتے ہوئے بالکل شرمندگی نہیں ہے۔

برطانیہ وافغانستان کی دوہری شہریت رکھنے والے 49 سالہ سابق افغان وزیر نے کہا کہ انہوں نے 2018 میں صدر کے حاشیہ برداروں کے ساتھ اختلافات کی وجہ سے حکومت چھوڑی تھی۔

مجھے امید ہے کہ دیگر سیاست دان بھی روپوشی کی زندگی گزارنے کے بجائے عوام کے ساتھ مل کر کام کرنے کے اسی راستہ کا انتخاب کریں گے۔ الجزیرہ کے مطابق سید سادات کی یہ کہانی طالبان کے قبضہ سنبھالنے کے بعد تیزی سے بدلتے ہوئے حالات کے پس منظر میں خاصی اہمیت حاصل کرگئی ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.