قبروں کاسودا! یا ضمیر کا سودا؟

رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی امت اتنی نیچ، زرخرید، لالچی نہیں ہوسکتی ہے۔ یہ نہ صرف مدفون میّتوں کا استحصال ہے بلکہ زندہ جاوید قوموں کا بھی استحصال ہے۔

حیدرآباد: اخبار منصف کے اتوار کے شمارہ میں ششدر و حیران کرنے والی خبر شائع ہوئی کہ ضلع سنگاریڈی کے تیلہ پور بلدی حدود میں واقع عثمان نگر کے قدیم قبرستان کو منتقل کرنے کے لئے تلنگانہ اسٹیٹ انڈسٹریل انفراسٹر کچرکارپوریشن (ٹی ایس آئی آئی سی) کی جانب سے میتوں کے وارثین کو فی کس ڈیڑھ لاکھ روپئے ادا کرکے قبروں کو منتقل کیا جارہا ہے۔ اس ضمن میں ۲۳ قبور کے وارثین کو رقم بھی ادا کردی گئی۔

یہ سب سڑک کی توسیع کی غرض سے کیا جارہا ہے۔ محمد عبد الرحیم خرم عمری جامعی، خطیب مسجد صحابہ،شاہین نگر،حیدرآباد، نے اس سلسلہ میں کہا کہ اس اقدام کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ یہ ایک منصوبہ بند، لالچی اورسازشی اقدام ہے۔

اس ضمن میں کارپوریشن اور رقم لینے والے وارثین کی شدید مذمت کی جانی چاہئے کیونکہ دوسرے مقامات پربھی یہی طریقہ کار اپنایا جائے گا، رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی امت اتنی نیچ، زرخرید، لالچی نہیں ہوسکتی ہے۔ یہ نہ صرف مدفون میّتوں کا استحصال ہے بلکہ زندہ جاوید قوموں کا بھی استحصال ہے، جو غیر اقوام کے لئے بھی باعث استعجاب ہوگا۔ کہیں ایسا نہ ہوکہ وہ مسلمانوں کو طعنہ دیں کہ”تم تو مردہ فروش امت ہو“۔

آزادی ہند کے وقت مولانا آزاد علیہ الرحمہ نے ہجرت کرنے والوں کو ان ہی مدفون میتوں کا حوالہ دے کر کہا تھا”کہ یہاں تمہارے آباء و اجداد کی ہڈیاں مدفون ہیں، ان کا و ارث آخر کون ہوگا؟“لیکن سنگاریڈی کے اس علاقہ کے وہ مسلمان جنہوں نے اس طرح کا سودا کیا ہے انھوں نے اپنے مرحومین کا استحصال کیا ہے۔ اس ضمن میں سدائے احتجاج بلند ہونی چاہئے۔

علماء، قائدین اور ذی شعور طبقہ حرکت میں آئے اور کارپوریشن کو اس سازش سے باز رکھے۔ اس ضمن میں شرعی رہنمائی کی ضرورت ہے۔ چونکہ مسلمان تابع شریعت ہیں، قبرستان کی وہ جگہ جہاں کوئی مدفون ہو وہ قیامت تک جنت یا جہنم کی کیاری ہی رہے گی۔ جہاں ریشم کا لباس و بستر بچھا دیا گیا ہوگا یا عذاب کا دریچہ واقع ہوگا۔

اسی لئے حکم دیا گیا ہوگا کہ ”نئی دلہن کی طرح تم سوجاؤ جسے کوئی جگانے والا نہ ہوگا، یا وہ جگہ میت کے لئے کیڑے مکوڑوں کا گہوارہ بن گئی ہوگی۔ کارپوریش کا یہ اقدام شریعت میں مداخلت کے مترادف ہے۔ لہٰذا علمائے اکرام کو آگے آنے کی ضرورت ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.