ممتا بنرجی کو جان سے مارنے کی دھمکی

چیف منسٹر ممتا بنرجی اب پورے ملک میں اپوزیشن چہرہ ہے۔ ہر کوئی موت کی دھمکی سے حیران ہے۔ تمل دت اور دیورشی رائے پروفیسر کے خلاف لال بازار میں الزامات دائر کر رہے ہیں۔

کولکتہ: کو کلکتہ یونیورسٹی کے تحت ایک کالج میں حیوانیات کے پروفیسر ارندم بھٹاچاریہ نے سوشل میڈیا پر وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کو جان سے مارنے کی دھمکی دے کر سب کو حیران کردیا ہے۔انہوں نے اپنے فیس بک اکائونٹ پر لکھا ہے کہ ’’میں وزیر اعلیٰ کا قتل کرنا چاہتا ہوں‘‘یہ معاملہ سامنے آنے کے کولکتہ پولس ہیڈ کوارٹر میں شکایت درج کرائی گئی ہے۔

ریاست کی خفیہ محکمہ نے پہلے ہی کہا تھا کہ چیف منسٹر نشانے پر ہیں ۔انتخابات کے دوران ممتا بنرجی نندی گرام میں ایک واقعے میں زخمی ہوگئیں اور ان کے پائوں کو چوٹ پہنچی ۔ممتا بنرجی نے الزام لگایا تھا کہ ایک سازش کے تحت ان کو زخمی کی گیا ہے۔

ریاستی جاسوسوں کا خیال ہے کہ وہ تب سے ہدف ہے۔ اس بار اسے براہ راست موت کی دھمکی دی گئی۔پروفیسر ارندم بھٹاچاریہ نے سوشل میڈیا پر وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کو جان سے مارنے کی دھمکی دے کرہلچل مچا دی ہے۔

چیف منسٹر ممتا بنرجی اب پورے ملک میں اپوزیشن چہرہ ہے۔ ہر کوئی موت کی دھمکی سے حیران ہے۔ تمل دت اور دیورشی رائے پروفیسر کے خلاف لال بازار میں الزامات دائر کر رہے ہیں۔ ان کے مطابق پروفیسر ایک عرصے سے متنازع ریمارکس دے رہے ہیں۔ اب تک یہ واٹس ایپ تک محدود ہے۔ اس بار انہوں نے کسی بھی چیز کی پرواہ کیے بغیر فیس بک پر یہ خطرناک تبصرہ کیاہ۔

ریاستی حکومت کی مختلف سرگرمیوں کے بارے میں ایک فیس بک گروپ پر بحث کے دوران پروفیسر نے اچانک کہا کہ ’میں ممتا بنرجی کا قتل کرنا چاہتا ہوں‘‘۔ اس کے بعد کے تبصروں کو دیکھتے ہوئے انہوںنے الزام عاید کیا کہ سیاست کی بنیاد پر ان کی بیوی کو نوکری نہیں دی گئی۔ شکایت کنندگان کے مطابق اگر کوئی پروفیسر اس زبان میں ریاست کے وزیر اعلیٰ کے بارے میں بات کرتا ہے تو اسے سیکورٹی کے بارے میں سوچنا چاہیے۔ چنانچہ انہوں نے لال بازار میں شکایت درج کرائی ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.