مولانا طارق جمیل پر ٹویٹر یوزرس کی تنقید

تاجی کھوکر کے جنازہ میں مولانا طارق جمیل کی شرکت پر ایک کمنٹیٹر نے لکھا کہ مولانا نے روالپنڈی کے انڈر ورلڈ ڈان کے جنازہ میں تو شرکت کی لیکن میں نے اُنہیں کبھی کسی کچی آبادی(سلم) یا کسی غریب کے مکان میں دعا کرتے نہیں دیکھا۔

نئی دہلی: راولپنڈی کے گینگسٹر (جرائم پیشہ سرغنہ) تاجی کھوکھرکی برسی پر مولانا طارق جمیل کی روتی اور دعائے مغفر ت کرتی تصاویر پر آن لائن برہمی کی لہر دوڑ گئی۔ فرائیڈے ٹائمس نے یہ اطلاع دی۔

ٹی وی اور میڈیا میں اکثر دکھائے دینے والے مولانا طارق جمیل تبلیغی جماعت سے وابستہ ہیں۔

جرائم پیشہ سرگرمیاں اور لینڈ گرابنگ کیلئے بدنام تاجی کھوکھر گذشتہ برس 6 جنوری کو انتقال کرگیا۔ اپوزیشن پاکستان پیپلز پارٹی سے اُس کی متنازعہ وابستگی تھی۔

گذشتہ برس راولپنڈی پولیس نے اُس کا نام دہشت گردوں کی فہرست (فورتھ شیڈول) میں ڈال دیا تھا۔ ٹویٹر یوزرس کو مبلغ اسلام مولانا طارق جمیل کی یہ حرکت پسند نہیں آئی۔

تاجی کھوکر کے جنازہ میں مولانا طارق جمیل کی شرکت پر ایک کمنٹیٹر نے لکھا کہ مولانا نے روالپنڈی کے انڈر ورلڈ ڈان کے جنازہ میں تو شرکت کی لیکن میں نے اُنہیں کبھی کسی کچی آبادی(سلم) یا کسی غریب کے مکان میں دعا کرتے نہیں دیکھا۔

دوسروں نے سوال کیا کہ ایسی مشہور شخصیت اِس ملک میں ہر فراڈئیے / ٹھگ کو جواز فراہم کررہی ہے جبکہ ایک اور ٹویٹر یوزر نے الزام عائد کیا کہ مولانا طارق جمیل ”مولانا آن ہائر(کرایہ پردستیاب مولانا)“ ہیں۔

ایک کمنٹیٹر نے لکھا کہ بعض اوقات مجھے سمجھ میں نہیں آتا کہ مولانا طارق جمیل سے نفرت کیوں ہے۔ وہ با اصول پابند ڈسپلن مولانا ہیں۔

جب تک پیسہ ملتا رہے وہ دعا کرنے کیلئے جاتے رہیں گے، مولانا آن ہائر ہیں۔ وہ مملکت کیلئے، عمران خان کیلئے، نواز شریف کیلئے یا پیسہ دینے والے کسی بھی شخص کیلئے کام کریں گے۔

2020 میں مولانا طارق جمیل کی اُس وقت مذمت ہوئی تھی جب اُنہوں نے کورونا وائرس وباء کو خواتین کے عریاں لباس کا نتیجہ قراردیا تھا۔ بعد میں اُنہوں نے اِن ریمارکس کیلئے معافی مانگ لی تھی۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.