ٹاملناڈو اسمبلی میں زرعی قوانین کیخلاف قرارداد منظور

بھارتیہ جنتا پارٹی اور اُس کی اتحادی اپوزیشن اے آئی ڈی ایم کے واک آؤٹ کے درمیان مرکزی حکومت سے تینوں زرعی قوانین کو منسوخ کرنے کے مطالبہ کے تعلق سے ٹاملناڈو اسمبلی نے ایک قرارداد منظور کی۔

چینائی:ٹاملناڈو قانون ساز اسمبلی نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور اس کی اہم اتحادی اپوزیشن اے آئی اے ڈی ایم کے واک آوٹ کے درمیان مرکزی حکومت سے تینوں زرعی قوانین کو مسوخ کرنے کے مطالبہ کے تعلق سے ہفتہ کو متفقہ طوررسے ایک قرارداد منظور کی۔

ڈی ایم کے کی جانب سے انتخابی منشور میں کئے گئے وعدے کے مطابق وزیراعلیٰ ایم کے اسٹالن نے تجویز پیش کی۔ تجویز کوصوتی ووٹ سے منظورکردیا گیا۔

تینوں زرعی قوانین کی سخت مخالفت کرتے ہوئے مسٹر اسٹالن نے کہا کہ مرکز نے ریاستی حکومتوں سے مشورہ کیے بغیر ان کو نافذ کیا ہے جو کہ نہ صرف وفاقیت کے اصول کے خلاف ہے بلکہ جمہوریت کا مذاق بھی ہے۔

اسٹالن نے چیف منسٹر بننے کے فورا بعد نئی دہلی میں وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ اپنی ملاقات کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ ان سے بھی تینوں زرعی قوانین کو کسانوں کے مفادات کے خلاف بتاتے ہوئے انہیں منسوخ کرنے کے لئے قدم اٹھانے کی اپیل کی تھی۔

نئی دہلی کی سرحدوں پر کسانوں کی نو ماہ سے زائد عرصے سے جاری تحریک کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ تینوں زرعی قوانین کے خلاف جیسی تحریک آزاد ہندوستان نے پہلے کبھی نہیں دیکھی۔ انہوں نے کہا کہ تینوں قوانین کو فوری طور پر منسوخ کیا جاناچاہئے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.