ٹویٹر پر غدار اور شامی کیوں کررہے ہیں ٹرینڈ؟

ہندوستان کی شکست کے لئے ملک کے مسلمانوں کو ذمہ دار ٹھہرانے کا فرقہ پرستوں پر جنون سوار ہوگیا ہے۔ یہی وجہ ہے ٹویٹر پر غدار اور شامی کے نام سے ٹرینڈ چل رہے ہیں۔

حیدرآباد: ٹی 20 ورلڈ کپ میں اتوار کے روز ہندوستان اور پاکستان کا میچ ہوا جس میں ہندوستان کو 10 وکٹ سے شکست ہوئی۔ مقابلہ میں جیت بھی ہوسکتی ہے اور ہار بھی۔ یعنی ہار جیت کھیل کا حصہ ہے۔ اس کے علاوہ کرکٹ کی ایک ٹیم گیارہ کھلاڑیوں پر مشتمل ہوتی ہے اور مقابلہ کا جو بھی نتیجہ نکلتا ہے اس کے لئے ٹیم ذمہ دار ہوتی ہے، ہار یا جیت کے لئے کسی ایک کھلاڑی کو ذمہ دار قرار نہیں دیا جاسکتا۔

لیکن آج صبح سے ٹویٹر پر ایک خاص طرح کا ٹرینڈ چل رہا ہے۔ ہندوستان کی شکست کے لئے ملک کے مسلمانوں کو ذمہ دار ٹھہرانے کا فرقہ پرستوں پر جنون سوار ہوگیا ہے۔

یہی وجہ ہے ٹویٹر پر غدار اور شامی کے نام سے ٹرینڈ چل رہے ہیں جن پر سرپھرے اور زہریلے ہندتوا سنگھی جنونی بھکت اول فول بک رہے ہیں۔ ہندوستان کی شکست کے لئے بولر محمد سمیع کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے ان کے خلاف نفرت انگیز باتیں کی جارہی ہیں۔

محمد سمیع میچ کا اٹھارواں اور اپنا چوتھا و آخری اوور پھینک رہے تھے جس کے دوران پاکستان کی ٹیم نے کامیابی حاصل کرلی۔ محمد سمیع کے اس اوور میں 17 رن بنائے گئے جبکہ ان کے خلاف جملہ 43 رن بنائے گئے۔ محمد سمیع کے اس پرفارمنس پر مسلم دشمن طاقتوں کو ہندوستانی اقلیتوں کو نشانہ بنانے کا موقع مل گیا اور وہ ہندوستان کی شکست کے لئے محمد سمیع کو ہی ذمہ دار قرار دے رہے ہیں۔

جہاں محمد سمیع کو سوشیل میڈیا پر ٹرول کیا جارہا ہے، وہیں ویراٹ کوہلی اور سابق کپتان مہندر سنگھ دھونی کو بھی برا بھلا کہا جارہا ہے کیونکہ پاکستانی کرکٹرس کے ساتھ میدان پر ان کی ملاقاتوں کی تصاویر سوشیل میڈیا پر وائرل ہوئی تھیں۔ گویا اسپورٹس مین اسپرٹ نام کی کوئی چیز ہی موجود نہیں ہے۔

اس کے علاوہ ہندوستانی ٹیم نے بلیک لائیوز میٹر کے عنوان سے جاری تحریک کےساتھ میچ سے قبل اظہار یگانگت کیا تھا جس پر بھی پوری ٹیم کو برا بھلا کہا جارہا ہے اور آن لائن ٹرولس کی ٹولیاں نفرت انگیز فیس بک پوسٹس اور ٹویٹس میں سرگرم ہیں۔

اس دوران ایک اچھی بات یہ ہوئی ہے کہ سچن تنڈولکر اور ویریندر سہواگ جیسے سینئر کھلاڑی محمد سمیع کی تائید میں آگے آئے ہیں۔ ماسٹر بلاسٹر سچن تنڈولکر نے محمد سمیع کی تائید میں ٹویٹ کرتے ہوئے انہیں ورلڈ کلاس بولر قرار دیا اور کہا کہ میچ کے روز محمد سمیع کے ساتھ جو ہوا وہ کسی بھی کھلاڑی کے ساتھ ہوسکتا ہے۔

سچن کے علاوہ ویریندر سہواگ، ہربھجن سنگھ، عرفان پٹھان اور یژویندر چہل جیسے کھلاڑیوں نے بھی محمد سمیع کی تائید میں ٹویٹس کرتے ہوئے ان کے ساتھ کھڑے ہونے کا اعلان کیا ہے۔

سیاسی قائدین میں سینئر کانگریس لیڈر راہول گاندھی اور عمر عبداللہ نے محمد سمیع کی تائید کی ہے۔ راہول گاندھی نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ محمد سمیع ہم سب آپ کے ساتھ ہیں۔ انہیں معاف کردیں جو آپ کے خلاف زہر اگل رہے ہیں کیونکہ انہیں محبت دینے والا کوئی نہیں ہے۔

عمر عبداللہ نے کہ  محمد سمیع گیارہ کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں جنہیں پاکستان کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ انہوں نے ٹیم انڈیا سے محمد سمیع کا ساتھ دینے کی اپیل کی ہے۔

رکن پارلیمنٹ حیدرآباد اور صدر مجلس بیرسٹر اسد الدین اویسی نے لب کشائی کرتے ہوئے ان لوگوں کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جو سمیع کے خلاف بکواس کررہے ہیں۔

انہوں نے محمد سمیع کے ساتھ روا سلوک کی شکایت کرتے ہوئے بتایا کہ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ملک میں فرقہ پرستی، نفرت اور شدت پسندی کس حد تک بڑھ گئی ہے۔ انہوں نے بی جے پی سے سوال کیا کہ آیا وہ اس کی مذمت کرے گی؟

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.