پرانے شہر کے بلدی مسائل حل کرنے سے حکام کا گریز

چوک مرغاں کی سڑک پر ایک بڑا گڑھا پڑگیا ہے۔ اس کے علاوہ جامعہ نظامیہ کے باب الداخلہ کے روبرو مین ہولس کا ڈھکن ٹوٹ جانے سے اس سڑک پر ٹریفک متاثر ہورہی ہے اور راہ گیروں کو مشکلات پیش آرہی ہیں۔

حیدرآباد: گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن اور محکمہ آبرسانی کی لاپرواہی کے باعث پرانے شہر کے مسائل میں اضافہ ہورہا ہے۔

چوک مرغاں کی سڑک پر ایک بڑا گڑھا پڑگیا ہے۔ اس کے علاوہ جامعہ نظامیہ کے باب الداخلہ کے روبرو مین ہولس کا ڈھکن ٹوٹ جانے سے اس سڑک پر ٹریفک متاثر ہورہی ہے اور راہ گیروں کو مشکلات پیش آرہی ہیں۔

اس طرح مسجد طالب الدولہ (زنجیروں کی مسجد) شبلی گنج‘ شاہ گنج کی سڑک پر بھی مین ہولس زمین میں دھنس گئے ہیں‘ جس کے نتیجہ میں مقامی عوام اور راہ گیروں کو اس سڑک سے گزرنے میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

مقامی عوام نے بتایا کہ اس سلسلہ میں جی ایچ ایم سی‘ آبرسانی اور مقامی نمائندوں کو واقف کرادیا گیا لیکن وہ ان کے مسائل حل کرنے کے لئے کوئی توجہ نہیں دے رہے ہیں۔

مقامی عوام اور راہ گیروں نے جی ایچ ایم سی کے کمشنر لوکیش کمار‘ میئر جی وجئے لکشمی‘ ایم ڈی واٹر ورکس دانا کشور سے درخواست کی کہ وہ پرانے شہر کے محلہ جات شبلی گنج‘ رکاب گنج‘ چوک مرغاں کی سڑکوں کا معائنہ کریں اور یہاں کے مسائل حل کریں۔ تاکہ مسافرین کو یہاں سے گزرنے میں سہولت ہوسکے۔

مقامی عوام اور راہ گیروں نے بتایا کہ جوبلی ہلز اور بنجارہ ہلز میں کسی بھی مسئلہ کی یکسوئی کے لئے جس طرح جی ایچ ایم سی عملہ فوری حرکت میں آتے ہوئے، وہاں کے مسائل حل کرتا ہے اسی طرح انہیں پرانے شہر کے مسائل حل کرنے کے لئے توجہ دینا چاہئے۔ عوام نے حکومت پر الزام عائد کیا کہ پرانے شہر کے بلدی اور دیگر مسائل حل کرنے کے لئے کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.