سونیا گاندھی اور راہول پر ای ڈی کی کاروائی، راجیہ سبھا گونج اُٹھا

پریزائیڈنگ آفیسر وی وجئے سائی ریڈی نے وقفہ سوالات شروع کرنے کی کوشش کی تو اپوزیشن پارٹیوں کے ارکان نعرے لگاتے ہوئے اسپیکر کے پوڈیم کے سامنے آگئے۔ یہ ارکان ای ڈی کی کارروائی پر بحث کا مطالبہ کر رہے تھے۔

نئی دہلی: کانگریس کی کارگزار صدر سونیا گاندھی اور پارٹی کے سابق صدر راہل گاندھی کے خلاف انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی کارروائی کا معاملہ راجیہ سبھا میں جمعرات کو ایوان میں چھایا رہا۔

 اپوزیشن لیڈر ملکارجن کھڑے اور قائد ایوان پیوش گوئل کے درمیان گرما گرم بحث ہوئی قبل ازیں ایوان زیرو آور کے دوران اسی معاملے پر ملتوی کر دیا گیا تھا پہلی کارروائی ملتوی کرنے کے بعد جب پریزائیڈنگ آفیسر وی وجئے سائی ریڈی نے وقفہ سوالات شروع کرنے کی کوشش کی تو اپوزیشن پارٹیوں کے ارکان نعرے لگاتے ہوئے اسپیکر کے پوڈیم کے سامنے آگئے۔ یہ ارکان ای ڈی کی کارروائی پر بحث کا مطالبہ کر رہے تھے۔

ریڈی نے ارکان کے نعرے بازی کے درمیان وقفہ سوالات کا آغاز کیا۔ دریں اثنا، ایوان میں قائد حزب اختلاف ملکارجن کھرگے نے کہا کہ حکومت جمہوریت کو کچل رہی ہے۔ حکومت اپوزیشن کو ختم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ اس سے جمہوریت ختم ہو جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ ای ڈی کا سیاسی استعمال کیا جا رہا ہے۔ اس مسئلہ پر ایوان میں فوری بحث ہونی چاہئے۔ اس پر ایوان کے لیڈر پیوش گوئل نے کہا کہ حکومت قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کے کام میں مداخلت نہیں کرے گی۔ یہ قانونی کارروائی ہے۔ یہ عدالت میں جانا چاہیے۔

تبصرہ کریں

Back to top button