شاہ رخ خان، یو اے ای لیگ میں بھی ٹیم خریدیں گے

آئی پی ایل کی طرز پر ٹی ٹوئنٹی لیگ دبئی میں بھی ہونے والی ہے۔ جلد ہی امارات کرکٹ بورڈ اس لیگ کا اعلان کرسکتا ہے۔

ممبئی: آئی پی ایل کی طرز پر ٹی ٹوئنٹی لیگ دبئی میں بھی ہونے والی ہے۔ جلد ہی امارات کرکٹ بورڈ اس لیگ کا اعلان کرسکتا ہے۔

شاہ رخ خان اس لیگ کا حصہ بننے جارہے ہیں۔ شاہ رخ پہلے ہی آئی پی ایل اور کیریبین پریمیر لیگ (سی پی ایل) میں ٹیم خرید چکے ہیں۔ یہ ان کی تیسری کرکٹ ٹیم ہوگی۔ متحدہ عرب امارات میں شاہ رخ کے مداحوں کی بڑی تعداد ہے۔ اس وجہ سے وہ اس لیگ میں بھی سرمایہ کاری کرنے جارہے ہیں۔

کرک بز کے مطابق اس ٹورنامنٹ میں 6 ٹیمیں حصہ لیں گی۔ ممبئی انڈینز کے مالک مکیش امبانی، دہلی کیاپٹلس کے چیرمین کرن کمار گاندھی، مانچسٹر یونائیٹڈ اور کیپری گلوبل کیاپٹلس لمیٹیڈ کے بانی راجیش شرما بھی اس لیگ کیلئے ٹیمیں خریدنے تیار ہیں۔

اڈانی گروپ کے ساتھ ای سی بی کا معاہدہ بھی تقریباً تصدیق شدہ ہے۔ اس لیگ کو آئی سی سی سے بھی منظوری مل چکی ہے اور اس ٹورنامنٹ کو یو اے ای ٹی ٹوئنٹی لیگ کا نام دیا گیاہے۔

ایمریٹس کرکٹ بورڈ اور اڈانی گروپ کے قریبی ذرائع کے مطابق دونوں کے درمیان بات چیت آخری مراحل میں ہے اور اگلے ہفتے تک ٹیم کا اعلان کیاجا سکتاہے۔ ای سی بی نے گوتم اڈانی سے براہ راست بات کی ہے۔ چھٹی ٹیم کیلئے راجستھان رائلز، سن رائزرز حیدرآباد اور چینائی سوپر کنگز کے بشمول کئی ٹیمیں آئی پی ایل سے بات چیت کررہی تھیں۔

انگلینڈ میں لنکاشائر کاؤنٹی کرکٹ کلب کے ساتھ ساتھ بگ بیش لیگ میں سڈنی سکسرز کے درمیان بات چیت چل رہی تھی لیکن اب اڈانی گروپ ٹیم خریدنے کیلئے پوری طرح تیار ہے۔ ای سی بی جون۔ جولائی میں لیگ شروع کرنا چاہتا ہے۔

متحدہ عرب امارات میں مقامی کھلاڑیوں کی کمی ہے۔ اس لیے ٹورنامنٹ کا زیادہ تر انحصار غیرملکی کھلاڑیوں پر ہوگا۔ لیگ کے تمام میاچس رات کو کھیلے جائیں گے۔

ایمریٹس بورڈ پہلے ہی 120 ملین امریکی ڈالر میں 10 سال کیلئے ٹورنامنٹ کے میڈیا حقوق فروخت کرچکا ہے۔ انگلش فٹبال کلب مانچسٹر یونائیٹڈ کی مالک گلیزر فیملی بھی اس لیگ میں ٹیم خریدنے جارہی ہے۔

اس سے قبل گلیزر فیملی نے آئی پی ایل کی 2 ٹیموں کی نیلامی میں بھی حصہ لیاتھا لیکن وہ ٹیم خریدنے میں کامیاب نہیں ہوسکے تھے۔ واضح رہے کہ اس بار آئی پی ایل میں 8 کے بجائے 10 ٹیمیں حصہ لیں گی۔ شاہ رخ خان نے کہاکہ انہیں کرکٹ سے محبت ہے اس لئے وہ ایک اور ٹیم خریدنے جارہے ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button