شہباز شریف کابینہ کی تشکیل میں تاخیر کا امکان

برسراقتدار اتحاد کی دوسری بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کو وفاقی کابینہ کا حصہ بننے میں پس و پیش ہے کیونکہ اس کے قائدین کی رائے بٹی ہوئی ہے تاہم شہباز شریف‘ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) پر زور دے رہے ہیں کہ وہ ان کی حکومت کا حصہ ضرو ر بنے۔

اسلام آباد: پاکستان کے نئے وزیراعظم شہباز شریف اپنی کابینہ تشکیل دینے میں وقت لگاسکتے ہیں کیونکہ انہیں برسراقتدار اتحاد کی نازک نوعیت کا پتہ ہے۔ وہ اپنے سبھی حلیفوں کو ساتھ لے کر چلنا چاہتے ہیں۔ پاکستان مسلم لیگ نوازاور پاکستان پیپلز پارٹی کے ذرائع نے اخبار ڈان کو بتایا کہ دونوں جماعتوں کی قیادت نے فیصلہ کیا ہے کہ تمام حلیف جماعتوں کو وفاقی کابینہ میں جگہ ملے اور انہیں ان کی پسندیدہ وزارتیں حاصل ہوں۔

 برسراقتدار اتحاد 8 سیاسی جماعتوں اور 4 آزاد ارکان پر مشتمل ہے۔ 70 سالہ شہباز شریف چاہتے ہیں کہ سبھی حلیفوں کو ساتھ لے کر چلا جائے خاص طورپر ان لوگوں کا خیال رکھا جائے جنہوں نے پاکستان تحریک انصاف کی مخلوط حکومت چھوڑکر اپوزیشن کا ساتھ دیا۔

برسراقتدار اتحاد کی دوسری بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کو وفاقی کابینہ کا حصہ بننے میں پس و پیش ہے کیونکہ اس کے قائدین کی رائے بٹی ہوئی ہے تاہم شہباز شریف‘ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) پر زور دے رہے ہیں کہ وہ ان کی حکومت کا حصہ ضرو ر بنے۔ شہباز شریف نے منگل کے دن پی پی پی قائدین آصف علی زرداری‘ بلاول بھٹو‘ صدر پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمن‘ ایم کیو ایم (پاکستان) قائدین‘ بی این پی مینگل کے صدر اختر مینگل‘ بی اے پی پارلیمانی قائد خالد مگسی‘ جمہوری وطن پارٹی کے سربراہ شاہ زین بگتی کے علاوہ آزاد رکن اسلم بھوتانی کے ساتھ علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔

دی نیوز نے یہ اطلاع دی۔ ایک خانگی ٹی وی چیانل سے بات چیت میں پاکستان مسلم لیگ نواز کے رکن پارلیمنٹ حلقہ فیصل آباد رانا ثناء اللہ نے کہا کہ نئی کابینہ اتفاق رائے سے اگلے دو چار دن میں بن جائے گی۔ پی پی پی کے ایک سینئر رہنما نے بتایا کہ ہمیں کابینی قلمدانوں سے زیادہ دستوری عہدو ں سے دلچسپی ہے۔

اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے 2 دستوری عہدے پہلے ہی خالی ہوچکے ہیں جبکہ صدرنشین سینیٹ صادق سنجرانی کو ہٹانے کا منصوبہ ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی‘ اسپیکر‘ صدرنشین سینیٹ اور صدارتی عہدہ تک چاہتی ہے کیونکہ اسے توقع ہے کہ ڈاکٹر عارف علوی مستعفی ہوجائیں گے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button