شیواموگہ میں بجرنگ دل کارکن کا قتل

ضلع کے ہیڈ کوارٹرس ٹاؤن میں بجرنگ دل کے 23سالہ کارکن کو چاقو گھونپ کر موت کے گھاٹ اتاردیاگیا۔ انتظامیہ نے امتناعی احکام نافذ کرکے اسکولوں اور کالجوں کو تعطیل دے دی۔

شیوموگہ: ضلع کے ہیڈ کوارٹرس ٹاؤن میں بجرنگ دل کے 23سالہ کارکن کو چاقو گھونپ کر موت کے گھاٹ اتاردیاگیا۔ انتظامیہ نے امتناعی احکام نافذ کرکے اسکولوں اور کالجوں کو تعطیل دے دی۔

ہرشا نامی کارکن کو اتوار کی رات بھارتی کالونی کی روی ورما گلی میں نامعلوم حملہ آوروں نے مبینہ طو ر چاقو گھونپ کر قتل کردیا۔

اسی شہر کے بعض کالجوں میں حال ہی میں حجاب تنازعہ پر ہنگامہ دیکھا گیا۔ تاہم اتوار کے قتل کے پس پردہ وجہ فوری طور پر معلوم نہ ہوسکی۔ واردات کے بعد مقتول کے کچھ حامیوں نے سڑکوں پر آکر برہمی ظاہر کی۔ ٹیلی ویژن فوٹیج میں وہ سنگباری کرتے نظر آرہے ہیں مگر یہ واضح نہیں کہ ان کا نشانہ کون تھا۔

وزیر داخلہ اراگا گیانیندر نے فوری شیوموگہ پہنچ کر مقتول کے لواحقین سے ملاقات کی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کو اہم سراغ حاصل ہوئے اور عنقریب خاطیوں کی گرفتاری عمل میں آئے گی۔

گیانیندر نے صحافیوں کو بتایا کہ ایک 23سالہ نوجوان کا قتل کردیا گیا۔ ایسے واقعات نہیں ہونے چاہیے۔ پولیس کو سراغ ملے ہیں اور یقینا وہ (خاطی) عنقریب گرفتار کرلیے جائیں گے۔

میں عوام سے امن و امن برقرار رکھنے کی اپیل کرتا ہوں۔“ ڈپٹی کمشنر سیلوامنی نے صحافیوں کو بتایا کہ شہر میں سی آر پی پی سی کی دفعہ 144 کے تحت امتناعی احکام نافذ کردیے گئے اور تمام اسکولوں اور کالجوں کو بھی بند رکھنے کا حکم دیا گیا۔

سیلومنی نے کہا کہ پولیس کیس کی تحقیقات کررہی ہے اور مجرمین کا پتا لگانے کے لیے کوشاں ہیں۔ ہم بھی ان کے ساتھ کام کررہے ہیں۔ پورے شہر میں دفعہ 144 نافذ کردی گئی، ہم نے اسکولوں اور کالجوں کو تعطیل دے دی ہے۔

سپرنٹنڈنٹ پولیس بی ایم لکشمی پرساد نے صحافیوں کو بتایا کہ واردات کے پس پردہ مجرمین کی تلاش کے لیے ٹاسک فورس تشکیل دی گئی ہے۔ پرساد نے صحافیوں کو بتایا کہ ان کا پتا لگانا اور انہیں سزا دلوانا ہماری ترجیح ہے۔

ہم عوام سے تعاون کرنے اور جذباتی حرکت نہ کرنے کی اپیل کرتے ہیں۔“ دریں اثناء ریاستی وزیر ایشورپا نے کہا کہ ہندو نوجوان کے قتل میں مسلمان غنڈوں کا ہاتھ ہے۔

انہوں نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ کانگریس لیڈر ڈی کے شیوکمار نے ان مسلم غنڈوں کو اکسایا، جس کے بعد یہ واردات پیش آئی۔ وہیں ڈی کے شیوکمار نے وزیر کے ایس ایشورپا کو پاگل شخص قرار دیا۔ کے ایس ایشورپا نے کہا کہ مسلم غنڈوں نے بجرنگل دل کے کارکن کا قتل کیا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button