عالمی یوم خواتین بڑے پیمانہ پرمنانے کا فیصلہ ۔ 6تا8 مارچ پروگراموں کا اہتمام، کے ٹی آر کا اعلان

حیدرآباد: حکومت تلنگانہ کی جانب سے خواتین کیلئے جاری ترقیاتی، فلاحی اسکیمات پر بہتر طورپرعمل کے پیش نظر ریاست کی حکمراں جماعت ٹی آرایس نے بین الاقوامی یوم خواتین کا جشن بڑے پیمانہ پر منانے کا فیصلہ کیا ہے۔اس سلسلہ میں پارٹی کے ارکان اسمبلی،ضلعی صدور کے ساتھ پارٹی کے کارگذارصدر کے تارک راما راو نے جمعرات کی صبح ٹیلی کانفرنس منعقد کی۔

اس موقع پر تارک راما راؤ نے 6 تا8 مارچ مہیلابندھو کے سی آرکے نام سے جشن منانے کی اپیل کی ہے۔انہوں نے زوردیتے ہوئے کہاکہ تقریبا دس لاکھ غریب لڑکیوں کی شادی کروانے کا سہرا چیف منسٹر کے چندرشیکھرراؤ کے سرجاتا ہے۔ایسا کام کرنے والے چندرشیکھرراو ملک کے پہلے چیف منسٹر ہیں۔

انہوں نے کہاکہ تقریبا 11لاکھ خواتین کو کے سی آرکٹس فراہم کی گئی ہیں جن کی زچگیاں سرکاری اسپتالوں میں ہوئی ہیں۔ان کے سی آرکٹس میں نوزائیدہ بچوں کی دیکھ بھال کا مکمل سامان ہے۔وزیر موصوف نے کہا کہ کے سی آرکٹس کی تقسیم کی اسکیم کے آغاز کے بعد ریاست میں زچہ اور نوزائیدہ بچوں کی اموات کی تعداد میں بتدریج گراوٹ ہوگئی ہے تو دوسری طرف سرکاری اسپتالوں میں زچگیوں کی تعداد میں اضافہ کا رجحان ہوا ہے۔

اس پروگرام پر تاحال 1700کروڑروپئے صرف کئے گئے ہیں۔اسی طرح کلیان لکشمی اسکیم کے تحت حکومت نے 902کروڑروپئے صرف کئے ہیں۔اس اسکیم سے تاحال 10.30لاکھ خواتین کو فائدہ پہنچا ہے۔انہوں نے کہاکہ ریاست کی خواتین کی بہبود کیلئے ٹھوس اقدامات پر حکمراں جماعت ٹی آرایس نے خواتین کے عالمی دن کو شاندار پیمانہ پر منانے کا فیصلہ کیا ہے۔

6مارچ کو تقاریب کا آغاز ہوگا جس میں خواتین کے مختلف گروپس کی جانب سے  کے چندرشیکھرراو کو راکھی باندھی جائے گی۔بعد ازاں طلبہ،ڈاکٹرس، سینی ٹیشن ورکرس اور سیلف ہیلف گروپس کے لیڈران کو تہنیت پیش کی جائے گی جس کے بعد کے چندرشیکھرراو سے اظہارتشکر کیلئے انسانی زنجیر بنائی جائے گی۔ 7مارچ کو ٹی آرایس کے لیڈران کلیان لکشمی اور کے سی آرکٹس اسکیمات سے استفادہ کرنے والوں کے مکانات پہنچ کر ان سے تبادلہ خیال کریں گے۔آخری دن حلقہ واری طورپر خواتین کے ساتھ خصوصی اجلاس منعقد کئے جائیں گے۔

Back to top button