عمران خان کی سیکوریٹی بڑھادی گئی

حکومت ِ پاکستان نے پیر کے دن سابق وزیراعظم عمران خان کی سیکوریٹی بڑھادی۔ 2 دن قبل عمران خان نے دعویٰ کیا تھا کہ انہیں قتل کرنے کی سازش ہورہی ہے۔

اسلام آباد: حکومت ِ پاکستان نے پیر کے دن سابق وزیراعظم عمران خان کی سیکوریٹی بڑھادی۔ 2 دن قبل عمران خان نے دعویٰ کیا تھا کہ انہیں قتل کرنے کی سازش ہورہی ہے۔

عمران خان نے ہفتہ کے دن دعویٰ کیا تھا کہ پاکستان میں اور بیرون ِ ملک ان کے قتل کی سازش کی جارہی ہے۔ انہوں نے خبردار کیا تھا کہ انہیں کچھ ہوا تو عوام کو پتہ چل جائے گا کہ اس کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے۔

وہ حال میں ایک ویڈیو پیام ریکارڈ کرکے محفوظ جگہ پر رکھ چکے ہیں۔ سابق وزیراعظم نے پاکستانی صوبہ پنجاب کے شہر سیالکوٹ میں ریالی سے خطاب میں کہا تھا کہ میری جان لینے کی سازش ہورہی ہے۔

مجھے چند دن قبل اس کی مکمل جانکاری ملی ہے۔ ملک اور بیرون ِ ملک بند کمروں میں سازش کی جارہی ہے۔ میں اس کے تعلق سے ایک ویڈیو ریکارڈ کراچکا ہوں جس میں میں نے سازش میں ملوث تمام افرادکے نام لئے ہیں۔

مجھے کچھ ہوا تو عوام کو پتہ چل جائے گا کہ سازش میں کس کا ہاتھ ہے۔ پیر کے دن وزیراعظم شہباز شریف نے وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کو ہدایت دی کہ پاکستان تحریک ِ انصاف(پی ٹی آئی) کے سربراہ کو پختہ سیکوریٹی فراہم کی جائے۔

وزیراعظم کے دفتر نے صوبائی حکومتوں کو بھی ہدایت دے دی کہ عمران خان کے لئے ایسے سیکوریٹی انتظامات کئے جائیں جس میں کوئی چوک نہ ہو۔ اسلام آباد کے مضافات میں سابق وزیراعظم کے بنی گالہ بنگلہ پر پولیس اور فرنیٹر کارپس کے 94 جوان تعینات کردیئے گئے ہیں۔

عمران خان کی نقل و حرکت کے دوران ان کے ساتھ 4 گاڑیاں اور اسلام آباد پولیس کے 23جوان ہوں گے۔ اس کے علاوہ ایک گاڑی اور 5 جوان فرنٹیر کارپس کے ہوں گے۔

تبصرہ کریں

Back to top button