فائرنگ کے مہلوک راکیش کے بھائی کو سرکاری ملازمت

نئی اسکیم اگنی پتھ کے خلاف احتجاج کے دوران ریلوے پولیس کی فائرنگ میں سکندرآباد ریلوے اسٹیشن پر ہلاک فوج میں بھرتی کے خواہش مند دمیرا راکیش کے بھائی کو سرکاری ملازمت کی فراہمی کے احکام جاری کئے ہیں۔

حیدرآباد: تلنگانہ حکومت نے جمعہ کو فوج میں بھرتی کی نئی اسکیم اگنی پتھ کے خلاف احتجاج کے دوران ریلوے پولیس کی فائرنگ میں سکندرآباد ریلوے اسٹیشن پر ہلاک فوج میں بھرتی کے خواہش مند دمیرا راکیش کے بھائی کو سرکاری ملازمت کی فراہمی کے احکام جاری کئے ہیں۔

چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے قبل ازیں کئے گئے اعلان کے مطابق چیف سکریٹری سومیش کمار نے رمیش کے بڑے بھائی دمیرا راما راجو کا تقرر کرتے ہوئے ایک جی او جاری کیا۔

چیف سکریٹری نے ورنگل ڈسٹرکٹ کلکٹر کو ہدایت دی کہ راما راجو کو ضلع میں دستیاب کسی بھی عہدہ کے لئے ان کی قابلیت کی مناسبت سے موزوں عہدہ پر تقرر کریں۔

فائرنگ میں راکیش کی ہلاکت کے ایک ہفتہ بعد جاری کیا گیا۔ چیف منسٹر نے اسی دن راکیش کے خاندان کے لئے 25 لاکھ روپے ایکس گریشیا دینے کا اعلان کیا تھا۔ 22 سالہ راکیش دبیر پیٹ موضع، ضلع ورنگل سے تعلق رکھتا تھا۔

راکیش، اگنی پتھ اسکیم کے خلاف 17/جون کو سکندرآباد ریلوے اسٹیشن پر احتجاج کرنے والے فوج میں بھرتی کے خواہاں نوجوانوں میں سے ایک تھا۔ احتجاجیوں نے ریلوے اسٹیشن میں زبردست توڑ پھور مچائی اور ٹرین کی کوچس، سامان مال برداری کو آگ لگا دی تھی اور دکانات کو نقصان پہنچایا تھا۔

تبصرہ کریں

Back to top button