لالویادو، چارہ اسکام کے پانچویں کیس میں خاطی

سی بی آئی کی خصوصی عدالت نے راشٹریہ جنتادل (آر جے ڈی) سربراہ لالو پرساد یادو کو 139.35کروڑ روپے کے دورانڈا ٹریژری اسکام میں خاطی قراردیا۔ یہ پانچواں چارہ اسکام کیس ہے۔

رانچی: سی بی آئی کی خصوصی عدالت نے راشٹریہ جنتادل (آر جے ڈی) سربراہ لالو پرساد یادو کو 139.35کروڑ روپے کے دورانڈا ٹریژری اسکام میں خاطی قراردیا۔ یہ پانچواں چارہ اسکام کیس ہے۔

لالو پرساد یادو کو عدالتی تحویل میں لے لیا گیا۔

سابق چیف منسٹر بہار نے سی بی آئی کی عدالت میں درخواست ِ ضمانت داخل کی تھی۔ انہوں نے اپنی درخواست میں کہا کہ ضمانت دی جاسکتی ہو تو انہیں عدالتی تحویل میں راجندر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسس(رِمس) بھیج دیا جائے کیونکہ ان کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے۔

سزا کا تعین 21 فروری کو ہوگا۔ لالو پرساد کے علاوہ عدالت نے دیگر 74 افراد کو خاطی قراردیا جبکہ 24 کو ثبوت نہ ہونے پر بری کردیا۔

36 خاطیوں کو 3 سال تک کی جیل ہوئی۔ قبل ازیں چیف منسٹر بہار 950 کروڑ کے چارہ اسکام کے سلسلہ میں 4 کیسس میں خاطی قرارپائے تھے۔ وہ 27.5 سال کی سزا کاٹ رہے ہیں۔

اسکام کے پانچویں کیس میں ایف آئی آر 1996میں دورانڈا پولیس اسٹیشن میں درج ہوئی تھی اور بعدازاں سی بی آئی نے تحقیقات کے لئے کیس کو اپنے ہاتھوں میں لے لیا تھا۔

لالو پرساد کے پاس وزارت ِ فینانس کا قلمدان بھی تھا۔ سابق چیف منسٹر 6 مرتبہ جیل جاچکے ہیں لیکن ہر بار ہائی کورٹ نے انہیں ضمانت دے دی۔

تبصرہ کریں

Back to top button