مالیگاؤں بم دھماکہ معاملہ: سادھوی پرگیہ سنگھ کے وکلاء نسیم خان پر برہم

آج خصوصی این آئی اے عدالت میں انسدا ددہشت گرد دستہ کے 2 سینئر عہدیدار حاضر ہوئے اور خصوصی این آئی اے جج سے کہا کہ انہیں اے ٹی ایس چیف نے ہدایت دی ہے کہ وہ عدالتی کارروائی میں حصہ لیں اور عدالت اور استغاثہ کی مدد کریں۔

ممبئی: مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ معاملہ میں آج یہاں بھارتیہ جنتا پارٹی کی رکن پارلیمنٹ و کلیدی ملزمہ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے وکلا ء نے مہاراشٹر کے سابق وزیر محمد عارف نسیم خان پر برہمی کا اظہار کیا اور الزام عائد کیا کہ خصوصی این آئی اے عدالت میں اے ٹی ایس کے عہدیداروں کی موجودگی نسیم خان کے دباؤ میں عمل میں آئی ہے۔

آج خصوصی این آئی اے عدالت میں انسدا ددہشت گرد دستہ کے 2 سینئر عہدیدار حاضر ہوئے اور خصوصی این آئی اے جج سے کہا کہ انہیں اے ٹی ایس چیف نے ہدایت دی ہے کہ وہ عدالتی کارروائی میں حصہ لیں اور عدالت اور استغاثہ کی مدد کریں۔

اے ٹی ایس کی جانب سے مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملہ کی تحقیقات کرنے والے عہدیدارموہن کلکرنی اور سینئر اے ٹی ایس عہدیدار موہتے نے آج خصوصی این آئی اے جج پی آر سٹرے کو بتایا کہ وہ آج عدالت اس لئے آئے ہیں کہ عدالت کی جاری سماعت کا حصہ بن سکیں اور عدالت اور استغاثہ کی مدد کرسکیں۔

اے ٹی ایس عہدیداروں کی عدالت میں موجودگی پر بھگوا ملزمین خصوصاً سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر اور کرنل پروہت کے وکلاء سراپا احتجاج ہوگئے اور انہوں نے عدالت سے کہا کہ عدالت کو اے ٹی ایس عہدیدار کو ایک سیکنڈ کے لئے بھی عدالت میں ٹھہرنے کی اجازت نہیں دینا چاہئے کیونکہ اے ٹی ایس نے ہی ملزمین کو جھوٹے مقدمہ میں پھنسایا ہے اور آج وہ عدالت میں ملزمین کے خلاف حاضر ہوئے ہیں۔

سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے وکیل جے پی مشرا نے کہا کہ حال ہی میں سابق وزیر عارف نسیم خان نے وزیر داخلہ اور اے ٹی ایس چیف سے ملاقات کی تھی جس کے بعد ہی وزیر داخلہ نے اے ٹی ایس عہدیداروں کو عدالت بھیجنے کا بیان دیا تھا۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button