مرکز میں ہمت ہے تو ہمیں عوامی مسائل پر بحث کرنے دے: راہول گاندھی

راہول گاندھی نے بڑھتی مہنگائی‘ لکھیم پور کھیری واقعہ اور دیگر مسائل پر بحث کی اجازت نہ دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ حکومت‘ جمہوریت پر حملہ آور ہے۔ جمہوریت پر متواتر حملے ہورہے ہیں۔

نئی دہلی: کانگریس قائد راہول گاندھی نے پیر کے دن زور دے کر کہا کہ پارلیمنٹ چلانا حکومت کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکز میں ہمت ہے تو وہ اپوزیشن کے اٹھائے گئے عوامی اہمیت کے مسائل پر بحث کی اجازت دے۔

راہول گاندھی نے بڑھتی مہنگائی‘ لکھیم پور کھیری واقعہ اور دیگر مسائل پر بحث کی اجازت نہ دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ حکومت‘ جمہوریت پر حملہ آور ہے۔ جمہوریت پر متواتر حملے ہورہے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہم اس کے خلاف یہاں جدوجہد کررہے ہیں۔

ان سے حکومت کے اس الزام کے بارے میں پوچھا گیا تھا کہ اپوزیشن‘ پارلیمنٹ چلنے نہیں دے رہی ہے۔ راہول گاندھی نے ہندی میں ٹویٹ کیا کہ یہ کیسی حکومت ہے جسے یہ نہیں معلوم کہ پارلیمنٹ کیسے چلائی جاتی ہے۔ وہ ہماری آواز دبا نہیں سکتی۔ حکومت میں اگر ہمت ہے تو اسے چاہئے کہ وہ بحث ہونے دے۔

سابق کانگریس صدر نے یہ بھی کہا کہ حکومت کو مملکتی وزیر داخلہ اجئے مشرا کو ہٹادینا چاہئے اور لکھیم پور کھیری مسئلہ پربحث کی اجازت دینی چاہئے تاکہ پارلیمنٹ چل سکے۔ انہوں نے کہا کہ ایوان کو چلانا حکومت کی ذمہ داری ہوتی ہے‘ اپوزیشن کی نہیں۔

راہول گاندھی‘ پارلیمنٹ کے باہر میڈیا نمائندوں سے بات چیت کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات واضح ہے کہ ہم چاہتے ہیں کہ مملکتی وزیر داخلہ کو ہٹادیا جائے اور لکھیم پور کھیری مسئلہ پر بحث ہونے دی جائے۔

کانگریس قائد نے کہا کہ آپ رول بک پڑھ کر دیکھ لیں‘ پارلیمنٹ چلانا حکومت کی ذمہ داری ہے‘ ہماری نہیں۔اسی کے ساتھ بحث ہونے دینا بھی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ کانگریس قائد نے کہا کہ وہ لداخ کو ریاستی درجہ کا مسئلہ اٹھانا چاہتے ہیں لیکن انہیں ایسا کرنے نہیں دیا جارہا ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button