مسجد قباء کے لیے شاہ سلمان توسیعی منصوبے کا اعلان

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے مدینہ منورہ میں مسجد قباء کی تاریخ کی سب سے بڑی توسیع شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ریاض: سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے مدینہ منورہ میں مسجد قباء کی تاریخ کی سب سے بڑی توسیع شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اس توسیع کے دوران میں مسجد کے اطراف اور نواح میں ترقیاتی کام بھی شامل ہے۔ توسیعی منصوبے کو خادم حرمین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے نام سے موسوم کیا گیا ہے۔

نئی توسیع کے ذریعے مسجد کا مجموعی رقبہ 10 گْنا بڑھ کر 50 ہزار مربع میٹر ہو جائے گا۔ مسجد کا موجودہ رقبہ 5 ہزار مربع میٹر ہے۔ اس طرح توسیع کے بعد مسجد میں نمازیوں کی گنجائش 66 ہزار تک پہنچ جائے گی۔ مسجد قبا سن 1 ہجری میں بنائی گئی تھی۔

سعودی ولی عہد نے یہ اعلان گذشتہ روز مدینہ منورہ کے دورے میں مسجد قبا میں نماز ادا کرنے کے موقع پر کیا۔شہزادہ محمد بن سلمان نے واضح کیا کہ یہ توسیعی منصوبہ مملکت کے پروگرام ویڑن 2030 کے اہداف اور مقاصد کو مکمل کرنے کا حصہ ہے۔

توسیع کے منصوبے میں مسجد قبا کے اطراف اور نواح میں واقع علاقوں اور تاریخی مقامات پر بھی ترقیاتی کام شامل ہیں۔ یہ کْل 57 مقامات ہیں جن میں کئی کنوئیں، کھیت، باغ اور رسول اللہ ؐ کے زیر استعمال تین راستے ہیں۔

اسلامی تاریخ کی پہلی مسجد کا اعزاز رکھنے والی مسجد قبا کو تاریخ کے ادوار میں فن تعمیر اور توسیع کے حوالے سے اہمیت حاصل رہی ہے۔

اس کا آغاز عہدِ نبویؐ سے ہوا اور پھر خلفاء راشدین کے ادوار، اموی اور عباسی ادوار سے گزرتا ہوا موجودہ مملکت سعودی عرب کے قیام پر اختتام پذیر ہوا۔ اس آخری دور میں شاہ عبدالعزیز آل سعود سے لے کر ان کے فرماں روا بیٹوں تک یہ سلسلہ جاری ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button